سر ورق / مکالمہ / طاہر جاوید مغل سے مکالمہ ۔۔ سیف خان

طاہر جاوید مغل سے مکالمہ ۔۔ سیف خان

 

 

 

ایک شام طاہر جاوید مغل کے ساتھ (انٹرویو و تعارف)

سیف خان

میرا تعلق کاروباری گھرانے سے ہے لیکن شروع سے پڑھنے لکھنے کی طرف رجحان زیادہ تھا.. والد صاحب عمارتی لکڑی کی فروخت کاکام کرتے تھے.. آغاز میں مجھے ایک مدرسے میں داخل کرایا گیا. میرا میلان دیکھتے ہوئے براہ راست ساتویں کلاس میں ایڈمیشن ملا. جن دنوں مدرسہ جاتا تھا ان دنوں ہی چھپ چھپ کر "بچوں کی دنیا” اور "کھلونے” جیسے رسائل زیر مطالعہ رہتے تھے.. پڑھنے کے علاوہ لکھنے کا شوق بھی جنون کی حد تک تھا.. دکان پر عمارتی لکڑی کے بڑے بڑے بلاکس کے درمیان میں نے قلم دوات اور ایک کاپی چھپا رکھی تھی.. انہی بلاکس اور شہتروں کے درمیان چھپ کر میں کہانی نویسی کرتا تھا.

میٹرک کے امتحان سے کچھ عرصہ پہلے ایک طویل کہانی "خلش” کے عنوان سے لکھی اور اس وقت کے موءقر رسالے آداب عرض کو ارسال کی.. یہ امید نہ ہونے کے برابر تھی کہ یہ شائع ہوگی. بس لکھنے کا شوق پورا کیا تھا … لیکن ایک دن دکان پر گیا تو آداب عرض کا نیا شمارہ میز پر پڑا تھا.. یونہی اس کی ورق گردانی کرنے لگا.. پھر یوں لگا جیسے اپنے ہی لکھے ہوئے الفاظ میں پڑھ رہا ہوں.. انکشاف ہوا کہ یہ تو میری ہی کہانی شائع ہوئی ہے اور اس نے آداب عرض کے ایک تہائی صفحات کو گھیرا ہوا ہے. شادی مرگ کی سی کیفیت طاری ہوگئی. اب تک 100 سے زائد کتب شائع ہوچکی ہیں لیکن جتنی خوشی اس تحریر کے شائع ہونے پر محسوس ہوئی پھر کبھی نہیں ہوئی. یہ غالبا 1970 کی بات ہے اب کئی بار اس کہانی کو تلاش کیا ہے لیکن نہیں ملی.

تخلیق  اور عمارتی لکڑی کاکام ساتھ ساتھ جاری رہا مگر پھر آہستہ آہستہ تخلیق کاروبار پر حاوی ہوگئی. نوائے وقت کے ہفتہ وار میگزین میں "تاریخی حادثات” کے عنوان سے ایک سلسلہ شروع کیا جو بہت مقبول ہوا .. پھر نوائے وقت میں ہی مختلف آرٹیکلز لکھے اور چند انگلش ناولوں کے قسط وار تراجم شائع ہوئے.. اسی دوران طارق اسماعیل ساگر صاحب نے سیارہ ڈائجسٹ سے آواز دی اور کہا کہ میں انسپیکٹر نواز خان کے نام سے تفتیشی کہانیوں کا آغاز کروں .. یہ سلسلہ بھی بہت کامیاب رہا.. اس پر چند ٹی وی ڈرامے بھی بنے. اسی زمانے میں اباقہ اور نور کی یلغار جیسے ناول بھی لکھے گئے. پھر کراچی کے ڈائجسٹوں کی طرف اڑان بھری.. لیکن خیال یہی تھا کہ صف اول کے ڈائجسٹ جیسے سسپنس, جاسوسی وغیرہ میں پزیرائی نہیں ملے گی. لہذا جب کراچی کا دورہ کیا تو اسے صرف دوسرے درجے کے ڈائجسٹوں تک ہی محدود رکھا.. لیکن وہاں سے بھی کوئی خاص حوصلہ افزائی نہیں ملی.. پھر مایوسی اور غصے کی ملی جلی کیفیت میں "انجان” کے نام سے ایک مختصر کہانی لکھ کر براہ راست محترم معراج رسول صاحب کو ارسال کردی.. انہوں نے اس مختصر کہانی کے اندر چھپے ہوئے جوش و جذبے کو پہچان لیا اور شاید انہوں نے اس چھوٹی سی کہانی میں تاوان, دیوی, اور للکار جیسی طویل کہانیوں کو بھی دیکھ لیا… نہ صرف انجان چھپی بلکہ اس کے ساتھ ہی جناب معراج صاحب کا ایک زبردست تعریفی خط بھی موصول ہوا جو بہت حوصلہ افزائی کا باعث بنا.. اس حوالے سے سیدانورفراز صاحب نے بھی زبردست کردار ادا کیا اور مجھے کھینچ تان کر اس میز پر لابٹھایا جہاں میں نے "تاوان” کی پہلی سطور لکھیں .. بہرحال یہ سلسلہ ایک بار شروع ہوا تو چل نکلا اور اللہ کی مہربانی سے ابھی تک جاری ہے.
……………………………………………………………………..

سوال و جواب.

1) سیدمحمدشاہ سلطانی
سر آپ نے تعلیم کہاں تک حاصل کی.. لکهنے کی طرف کب آئے اور کس سے متاثر ہوکر لکھنا شروع کیا.اور سر میں نے آپ کے بہت سے ناولز پڑھے ہیں.. دیوی.. للکار.. رات کا مسافر.. دیوی .. تاوان جاری ہے اور ساتھ ہی انگارے کا مطالعه بهی ہورہا ہے. ماشاءالله آپ بہت اچها لکهتے ہیں…
لیکن ایک گزارش که آپ نے هرناول میں ہیروئن کو ملکهء جذبات بنا رکها ہے. یه کچھ جچتا نہیں… تهوڑی تبدیلی نہیں آنی چاہیئے ؟؟

☆ طاہرجاویدمغل
نفسیات میں ایم اے کرنے کی خواہش دل میں ہی رہی لیکن گریجوئیشن تک ضرور پہنچے.. نفسیات میرا پسندیدہ ترین مضمون رہا اور کسی حد تک اب بھی ہے.
لکھنے کی طرف کب آئے… کا جواب میں اوپر دے چکا ہوں. کرشن چند, ممتاز مفتی, اور ابن صفی پسندیدہ ترین مصنفین رہے ہیں.
آپ نے کہا ہے کہ ہر کہانی میں ہیروئن ملکہ جذبات ہوتی ہے مگر بہت سی کہانیوں میں صورت حال مختلف بھی ہے.. جیسے فیصلہ, آندھی, دیوی وغیرہ میں ہیروئنز نے جاندار کردار ادا کیئے ہیں.

2) ریحان بنگش/ ماریہ خان
کہانی لکھتے وقت (یعنی جب لکھنے کیلئے بیٹھ جاتے ہیں) آپ کے جذبات و احساسات کیسے ہوتے ہیں.. کس ماحول میں لکھنا پسند کرتے ہیں؟

☆ طاہرجاویدمغل
لکھنا شروع کرنے سے پہلے کچھ دیر اسٹڈی کے اندر ہی چہل قدمی کرتا ہوں اور سوچتا ہوں.. بند کمرے میں یکسوئی کے ساتھ لکھنا اچھا لگتا ہے.

3) علی رضا آتش/ عظمی ناز
سر آپ ہمیشہ ہر ناول میں ہیروئن کی پہلی شادی ہیرو کے علاوہ کسی اور سے کیوں کرواتے ہیں؟

☆ طاہرجاویدمغل
دنیا کے بڑے بڑے مسائل شادی کے بعد ہی تو پیدا ہوتے ہیں ان میں حضرت آدم کا جنت سے نکالا جانا بھی شامل ہے.. اور کہانی کا اصل موضوع تو حادثات, مسائل اور ان کا حل ہی تو ہوتا ہے.

4) ماہ رخ ارباب.
کہانی کا انجام پہلے سے سوچ رکھا ہوتا ہے یا عوامی امنگوں کے مطابق تحریر کو آگے بڑھاتے ہیں؟

☆ طاہرجاویدمغل
آپ کا سوال بڑا اچھا ہے.. مختصر کہانیوں اور ایک یا دو قسط کی طویل کہانیوں کا انجام تو نوے پچانوے فیصد پہلے سے سوچ رکھا ہوتا ہے. مگر طویل قسط وار کہانیوں میں صورت حال مختلف ہوتی ہے. کہانی کا اختتام کہانی کے ساتھ ساتھ ڈویلپ ہوتا ہے. قارئین کی طرف سے جن کرداروں کے مقبول یا ناپسندیدہ ہونے کا اشارہ ملتا ہے ان کو بڑھایا اور گھٹایا بھی جاتا ہے.

5) وقار عظیم
اباقہ کا دوسرا پارٹ کیوں نہیں لکھ رہے آپ؟
آپ کا اپنی تصانیف میں سب سے پسندیدہ ناول اور کردار؟
کیا مستبقل میں آپ کے قلم سے جہانی استاد جیسا کوئی جی دار ، مسحور کن کردار دیکھنے میں آئے گا؟

☆ طاہرجاویدمغل
اباقہ کی کہانی ختم ہوگئی تھی. لوگ اس کا دوسرا حصہ لکھنے پر اصرار کرتے ہیں لیکن ابھی ایسا کوئی ارادہ نہیں .. اباقہ کے سلسلے میں دلچسپ بات یہ ہے کہ شروع میں یہ کہانی صرف ایک قسط کی تھی مگر جب یہ تحریر ایڈیٹر سیارہ ڈائجسٹ کی نظر سے اور مرحوم علی سفیان آفاقی صاحب کی نظر سے گزری تو انہوں نے کہا یہ پاور فل کردار ہے اسے طویل کہانی کی شکل دیں.
آپ نے جہانی استاد کا ذکر کیا ہے یہ بہت سے لوگوں کا پسندیدہ کردار ہے لیکن یہ کہنا مشکل ہے کہ پھر اس جیسا یا اس سے بہتر کردار تخلیق ہوسکتا ہے یا نہیں.

6) ساگر تلوکر
نئے لکھاریوں میں کس کے کام سے مطمئن ہیں۔ کبیر عباسی صاحب کے بارے آپکی کیا راۓ ہے؟

☆ طاہرجاویدمغل
میں تو خود کو بھی نیا اور نوآموز لکھاری سمجھتا ہوں ویسے نئے لکھنے والوں میں سے آپ نے خود ہی ایک بہت اچھا نام لیا لے لیا ہے.. کبیر عباسی سے کافی امیدیں وابستہ ہیں.

7!) ساگرتلوکر/ پرویزاحمدلانگاہ
کیا جاسوسی اور سسپنس پڑھتے ہیں ؟ پہلے اور اب میں کیا فرق محسوس کرتے ہیں؟ کسی قاری کی ایسی داد جو آپ بھول نہ پاۓ ہوں؟

7!!) خالد شیخ طاہری
میرا سوال تو کوئی نہیں بس ایک درخواست ہے ” کرب آشنائی ” لکھتے ہوئے جو عجیب واقعات آپ کے ساتھ ہوئے جو قارئین کے ساتھ ایک دفعہ اور شئیر کریں…

☆ طاہرجاویدمغل
کبھی کبھی سسپنس اور جاسوسی پڑھتا ہوں.. سرگزشت میں بھی کچھ موضوعات میرے پسندیدہ ہیں . داد کے حوالے سے ایک واقعہ یادگار ہے.. ایک قاری جو امریکہ سے کراچی آیا تھا.. فون پر مجھ سے مخاطب ہوا. اسے "کرب آشنائی” کے اختتام نے بہت ہرٹ کیا تھا.. اس نے بڑی سنجیدگی سے مجھے آفر دی کہ وہ ایک بلینک چیک بھیج دیتا ہے .. میں اپنی صوابدید کے مطابق اس میں جتنی رقم چاہے بھرلوں… لیکن کرب آشنائی کا اینڈ اس کی مرضی کے مطابق HAPPY انداز میں کردوں .. میں نے اسے سمجھایا بجھایا اور اس پر سے کہانی کے سنجیدہ اثرات کم کرنے کی کوشش کی .. اس نے جس انداز میں کہانی کی تعریف کی وہ آج تک یاد ہے.

8) طلعت مسعود/ زویا اعجاز/ثقلین بھٹی/قدیراحمد
اباقہ اور نور کی یلغار کے بعد ان جیسے تاریخی پس منظر پر مشتمل ناول نہیں آئے۔ کیا مستقبل میں اس طرح کا کوئی ارادہ ہے۔ ؟

☆ طاہرجاویدمغل
اباقہ اور نور کی یلغار جیسے ایک ناول کا ارادہ بن تو رہا ہے باقی جو اللہ کو منظور.

9) سعدیہ قادری
السلام علیکم سر، آپ میرے پسندیدہ مصنفین میں سے ہیں، آپکی تحریر کردہ للکار جاسوسی ڈائجسٹ سے جڑنے کی وجہ بنی، رات کا مسافر میرا پسندیدہ ترین ناول ہے، میرا سوال ہے کہ کیا یہ سچے واقعہ پر مبنی ہے، اسکے علاوہ آپ کی منظر کشی کمال ہوتی ہے، قاری خود کو اسی مقام پر محسوس کرتا ہے جسکا ذکر ہورہا ہو، جن مقامات کی منظر نگاری آپ کرتے ہیں کیا آپ ان مقامات پر جاچکے ہیں یا تخیل سے کام لیتے ہیں؟

☆ طاہرجاویدمغل
وعلیکم السلام .. تحریروں کی پسندیدگی کا شکریہ. رات کا مسافر ایک جیتے جاگتے کردار کی کہانی ہے .. یہ کردار ماشاءاللہ اب بھی حیات ہے… جن مقامات کا ذکر میری کہانیوں میں ہوتا ہے وہاں زیادہ تر میں جاچکا ہوں.

10) عائشہ خان
میرا ایک ہی سوال ہے.. آپ ہیروئینز کو موسٹلی بے بس کیوں دکھاتے ہیں؟ اس میں قوتِ فیصلہ کا فقدان کیوں ہوتا ہے.. وہ غلط قدم کیوں نہیں اٹھا سکتی؟ اسے پاکستانی اسپیشلی مشرقی معاشرے کا آئیڈیل ہی کیوں دکھایا جاتا ہے..

☆ طاہرجاویدمغل
ہمارے معاشرے کی ایک بڑی خامی خواتین کی لاچاری اور بے بسی ہی تو ہے.. یہی صورتحال میری کہانیوں میں بھی منعکس ہوتی ہے. اللہ کرے ہمارے معاشرے کی عورت کو عزت سے سر اٹھا کر جینا آجائے.

11) فراز حسین سومرو/ محمد محبوب عالم/عبدالودودعامر
اسلام علیکم سر ـــ میں نے آپ کے ناول دیوی سے جاسوسی پڑھنا شروع کیا تھاــ اس کے بعد سے کوئی ناول مس نہیں ـــ آپ میرے موسٹ فیورٹ رائیٹر ہیں ـــ آپ کا پسندیدہ ناول کون سا ہے ـــ اور اپنے ناولز میں سے کون ناول زیادہ پسند ہے ؟

☆ طاہرجاویدمغل
فراز حسین سومرو, محمدمحبوب عالم, عبدالودود عامر.. وعلیکم السلام
اللہ آپ سب کو صحت و سلامتی سے رکھے.. ایک پسندیدہ کہانی کا نام تو آپ نے خود ہی لکھ دیا….. دیوی!! اس کے علاوہ پرواز, تاوان, آندھی, اور اباقہ بھی ایک خاص کیفیت میں لکھی گئی کہانیاں ہیں .. کہانیوں کے مجموعے میں علی میاں پبلی کیشنز سے چھپی ہوئی کتاب پرستش مجھے زیادہ پسند ہے.

12) عبدالودود عامر
نئے لکھنے والوں کے لیے کوئی نصیحت؟

☆ طاہرجاویدمغل
نئے لکھنے والوں کیلئے یہی مشورہ ہے کہ وہ اپنا مطالعہ بڑھانے کی کوشش کریں.

13) شہباز ساغر ثانی
آداب!
بعد از دعاۓ سلامتی عرض ہے کہ
آپ کی منظر نگاری نے شروع سے گرویدہ بنا رکھا ہے
آپ کی کئی کہانیوں سے دیس بدیس گھومنے کا موقع ملا ہے ترکی یا مصر کے حوالے سے کسی جاندار کہانی کا منتظر ہوں.مختصر تحاریر پر طبع آزمائی کرتا رہتا ہوں
کئی خیالات بھی ذہن میں آتے ہیں انہیں لکھ نہیں پاتا…
ایک ناول یا طویل کہانی کے لوازمات کیا ہیں؟

☆ طاہرجاویدمغل
کبھی ترکی یا مصر کی طرف رخ ہوا تو پھر ان شاءاللہ لکھ بھی دیں گے.. میری رائے کے مطابق آپ طویل کہانیوں سے پہلے مختصر کہانیاں لکھنے کی کوشش کریں. اور مشہور مصنفین کی مختصر کہانیاں پڑھیں.

14) کبیرخان جلال زئی.
سر انگارے ناول تاوان کی طرح طویل کریں کم از کم 10 سال تک چلنا چاہیئے.

☆ طاہرجاویدمغل
نہیں… ناول انگارے تاوان کی طرح طویل تو نہیں ہوسکتا.. کچھ مکمل کہانیاں اور مزید قسط وار بھی لکھنا چاہ رہا ہوں.

15) شہباز ساغر ثانی.
انسانی زندگی پر مذہبی اثرات کیسے اثرانداز ہوتے ہیں؟
اور انہیں کہانی میں کیسے اور کس حد تک پیش کیا جاۓ؟

☆ طاہرجاویدمغل
روحانیت میں بہت طاقت ہے یہ زندگی کو آسان بناتی ہے.. اور مشکل ترین حالات میں انسان کیلئے ایک بےمثال سہارا ثابت ہوتی ہے. میری ناچیز رائے میں جو لوگ روحانیت اور مذہب سے دور ہیں وہ ترس کھائے جانے کے قابل ہیں . لیکن مذہب صرف عبادات کا نام نہیں .. ہم مسلمانوں کو مذہب ہے اس پہلو پر بھی بہت غور کرنے کی ضرورت ہے جس کا تعلق حقوق العباد سے ہے.

16) سعدیہ ہما شیخ
آپ کا ہیرو ہمیشہ گریز کا رویہ کیوں اختیار کرتا اور ہیروئن اتنی بسوری سی کیوں ہوتی ہے.

☆ طاہرجاویدمغل
ہیرو گریز کا رویہ اختیار کرتا ہے اسی لیئے تو وہ ہیرو ہوتا ہے.. ورنہ لڑکیوں کے پیچھے بھاگنے والے خودساختہ ہیرو تو بہت بدنام ہیں… انہیں کئی نازیبا نام دیئے جاتے ہیں.
جو کچھ معاشرے میں نظر آتا ہے وہیں کچھ کہانیوں اور ڈراموں وغیرہ میں ریفلیکٹ ہوتا ہے.. لیکن اس میں EXEPTIONS بھی ہیں.. ظاہر ہے جب کسی ایڈووکیٹ یا ڈاکٹر خاتون کی کہانی لکھی جائے گی تو وہ ہیروئین روتی بسورتی نہیں ہوگی.

17) شہبازساغرثانی
کہانی کا خاکہ کیسے لکھا جاۓ ؟
بنیادی خاکے میں تبدیلی کیسے اور کس حد تک کی جاۓ؟
آپ لکھنے کے لیے کا غذ استعمال کرتے ہیں یا کمپیوٹر پر ٹائپ کرتے ہیں؟

☆ طاہرجاویدمغل
کہانی نویسی سیکھنے کی چیز تو نہیں ہے لیکن پھر بھی اگر آپ چاہیں تو بازار میں نثر نگاری کے موضوع پہ کتب مل سکتی ہیں.. آپ نے کمپیوٹر کے استعمال کے بارے میں پوچھا ہے.. میں لکھنے کیلئے کمپیوٹر استعمال نہیں کرتا.. ابھی تک کاغذ اور قلم سے رشتہ برقرار رکھا ہوا ہے. کاغذ اور قلم کو بالکل اداس بھی تو نہیں کرنا ہے ناں …

لبابہ علوی/ سیداعظمی

Lubaba Alvi
No question for my dearest SirTahir Javed Mughal ..just a request. Please whenever you will come to isb then kindly meet your fans (group meet up).i really want to meet my favouritest writer 😍

☆ طاہرجاویدمغل
ان شاءاللہ

☆ طاہرجاویدمغل
آخر میں امجد  جاوید صاحب کا شکریہ کہ انہوں نے اپنے قارئین سے رابطے کا موقع دیا.. اس ویب سائیٹ کیلئے ان کی کوششوں کو بہت سراہا جانا چاہیئے. ان کیلئے بہت سی نیک تمنائیں.
کاوش: امجدجاوید صاحب, سیف خان
مآخذ سوالات: جاسوسی آفیشل فین کلب
پیشکش: اردو لکھاری ڈاٹ کام

- admin

admin

یہ بھی دیکھیں

جناب عارف محمود سے ملاقات!  یاسین صدیق

محترم جناب عارف محمود (ایڈیٹر ماہنامہ حکایت لاہور ) سے ملاقات!  یاسین صدیق ماہنامہ حکایت …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے