سر ورق / شوبز / شو بز ایک نظر۔۔۔اشفاق حسین

شو بز ایک نظر۔۔۔اشفاق حسین

شمیم آراءکی دوسری برسی


ماضی کی ناموراداکارہ اورہدایتکارہ شمیم آراءکواس دُنیا سے رُخصت ہوئے دو برس بیت گئے ،وہ 2010ءسے کومامیں رہنے کے بعد 5 اگست2016ءکولندن میں78 برس کی عمر میںخالقِ حقیقی سے جاملی تھیں۔انہیں پاکستان کی پہلی کامیاب خاتون ہدایتکارہ ہونے کا اعزاز بھی حاصل ہے۔ان کاحقیقی نام پُتلی بائی تھالیکن شمیم آراءکے نام سے فلموں میں شناخت بنائی۔بطور اداکارہ فلمی کیریئر 1950ءکی دہائی سے شروع ہوکر1970ءکی دہائی تک محیط رہا۔”کنواری بیوہ“ان کی پہلی فلم تھی جس کے بعددیوداس،دوراہااورہمراز جیسی فلموں میں کام کیا۔شُہرت کاسفر1965ءمیں”نائلہ“ سے شروع ہوا،اس سے قبل”سنگم“ان کی پہلی بھرپور فلم تھی جو 23 اپریل1964ءمیں ریلیز ہوئی۔1960ءمیں”سہیلی“ نے کیریئر کو آگے بڑھانے میں اہم کردار ادا کیا۔1962 میں ”قیدی“میں نورجہاں کی آواز میں فیض کی غزل”مجھ سے پہلی سی محبّت میرے محبوب نہ مانگ“ان پر فلمائی گئی۔60ءکی دہائی میں انکی کامیاب فلموں میںقیدی،چنگاری، فرنگی،نائلہ،آگ کا دریا،لاکھوں میں ایک،صائقہ،سالگرہ شامل ہیں۔1970ءکی دہائی کے اوائل میں لیڈنگ ایکٹریس کے طور پرریٹائرمنٹ لے لی تھی۔بطورپروڈیوسرپہلی فلم 1968 میں”صائقہ“بنائی۔”جیو اورجینے دو“ بطور ڈائریکٹرپہلی فلم تھی جو1976ءمیں ریلیز ہوئی۔1995ءمیںبطور ڈائریکٹر”منڈا بگڑا جائے“بنائی جس نے باکس آفس پر ڈائمنڈ جوبلی مکمل کی۔بطور ڈائریکٹر ان کی دیگر مشہور فلموں میں پلے بوائے،مِس ہانگ کانگ،مِس سنگاپور،مِس کولمبو،لیڈی سمگلر،لیڈی کمانڈو،آخری مُجرا،بیٹا،ہاتھی میرے ساتھی ،مُنڈا بگڑا جائے،ہم تو چلے سُسرال،مِس استنبول،ہم کسی سے کم نہیں اورلَو 95ء قابل ذکرہیں۔انکی مشہورفلموں میں مِس56ئ،واہ رے زمانے،عالم آرائ،اپنا پرایا، فیصلہ،سویرا،جائیداد،مظلوم،راز،بھابھی،دو اُستاد،عزّت،رات کے راہی،سہیلی،انسان بدلتاہے،زمانہ کیاکہے گا،زمین کا چاند،آنچل،محبوب،میرا کیاقصور،انقلاب، دُلہن،ایک تیرا سہارا،غزالہ،کالا پانی،سازش، سیمائ،تانگے والا،دیوداس،دل کے ٹکڑے،فیشن ، جلوہ،مجبور،میرے محبوب،پردہ،ہمراز، لاکھوں میں ایک،دل میرا دھڑکن تیری،آنچ،دل بے تاب، سالگرہ،آنسو بن گئے موتی،بے وفا،پرائی آگ،سہاگ،وحشی،خاک اورخون،انگارے ،خواب اور زندگی ،پلے بوائے،میرے اپنے اورپل دو پل شامل ہیں۔1960 میں انہیں بہترین سپورٹنگ ایکٹریس کا نگار ایوارڈ ملا جس کے بعد 1964، 1965، 1967 اور 1968ءمیں مسلسل بہترین اداکارہ کا نگار ایوارڈ ان کے حصّے میں آیا۔ 1993ءاور 1994ءمیں بہترین ڈائریکٹرکا نگار ایوارڈ بھی دیاگیا،1999ءمیں انہیں الیاس رشیدی گولڈ میڈل سے نوازا گیا تھا۔انہوں نے وحیدمراد،محمد علی،سنتوش کمار،درپن اورندیم جیسے اداکاروں کےساتھ اداکاری کے جوہر دکھائے۔
نازیہ حسن کی 18ویں برسی!!


پوپ گلوکارہ نازیہ حسن کواس دُنیا سے گئے 18 سال ہوگئے مگروہ مداحوں کے دلوں میں آج بھی زندہ ہیں اس لئے ان کی سالگرہ یا برسی پر مداحوں کی طرف سے تقاریب کا انعقاد کیا جاتا ہے۔اب13اگست کوان کی 18ویں برسی منائی جارہی ہے۔3اپریل 1964ءکو پیدا ہونے والی نازیہ حسن13اگست2000ءکوپھیپھڑوں کے کینسر کے ہاتھوں صرف 35سال کی عمر میں زندگی کی بازی ہارگئی تھیں۔
کیریئرکاآغاز70ءکی دہائی میں پی ٹی وی سے بطورچائلڈ آرٹسٹ کیالیکن پروفیشنل کیریئرپندرہ سال کی عمر میں1980ءمیں شروع کیا،ان کا گانا”آپ جیسا کوئی میری زندگی میں آئے“ بھارتی فلم”قربانی“میں شامل ہوا تو ہر طرف ان کی دھوم ہوگئی،اس گانے کو فلم فیئر ایوارڈ سے بھی نوازا گیاتھا۔”ڈسکو دیوانے“کے بعد ان کے دوسرے البم بھی بہت کامیاب ہوئے۔
”تلّے والی جتّی “
عیدالاضحٰی پر ریلیز ہونے والی فلم”جوانی پھر نہیں آنی 2“ کے پہلے گانے”بہکارے“ کے بعد دوسرا گانا”تِلّے والی جتّی“ بھی ریلیز کردیا گیا جسے کافی پسندبھی کیاجارہاہے۔اس سے پہلے”بہکا رے“کویوٹیوب پر 1.2 ملین لوگ دیکھ چکے ہیں۔”تلے والی جتّی“کو لوک گلوکار عارف لوہار اوراحمد علی بٹ نے گایا ہے۔”جوانی پھر نہیں آنی 2“ کے نمایاں فنکاروں میں ہمایوں سعید‘فہد مصطفٰی‘کبریٰ خان‘ ماورا حسین‘ عظمٰی خان،ثروت گیلانی‘ واسع چودھری‘احمد علی بٹ‘ عمر شہزاد اور سہیل احمد شامل ہیں۔ سلمان اقبال فلمز اور سکس سِگما پلس کے بینر تلے بننے والی اس فلم کو ندیم بیگ نے ڈائریکٹ کیا ہے جبکہ کہانی واسع چودھری نے لکھی ہے۔ فلم عیدالاضحٰی پر پاکستان کے علاوہ برطانیہ‘کینیڈا‘ یورپ اور مشرق وسطٰی کے ممالک میں بھی ریلیز ہوگی۔
”لوڈویڈنگ“کی موسیقی آگئی!!
پروڈیوسرفضاعلی میرزااورڈائریکٹر نبیل قریشی کی فلم”لوڈ ویڈنگ“عیدالاضحٰی پر ریلیز ہورہی ہے،ٹیرز اورٹریلر کے بعدفلم کامکمل میوزک بھی ریلیزکردیا گیا ہے جو”زی میوزک کمپنی“کے اشتراک سے متعارف کرایاگیا ہے ۔میوزک البم میںایک ویڈیو اورپانچ آڈیوگانے شامل ہیں۔ایک گانے”رنگیا“کی موسیقی معروف موسیقارشانی ارشدنے ترتیب دی ہے جواس سے قبل ”فلم والاپکچرز“کی دونوں فلموں ”ایکٹر اِن لائ“اور”نامعلوم افراد“جیسی سُپرہٹ فلموں کامیوزک بھی دے چکے ہیں،فلم کے البم میں شامل گانے خوب صورت دُھنوں کے ساتھ بہترین شاعری پرمشتمل ہیں جنہیں گلوگاروں نے اپنی آوازسے مزیدچارچاندلگائے ہیں،فلم کا ڈانس نمبرایک رومینٹک سانگ ہے جسے سامعین ہر موڈ میں سُن سکتے ہیں جبکہ فلمی گانوں میں زیادہ تر پنجابی رنگ نمایاں ہے۔فلم کا ریلیزکردہ ویڈیو ٹریک فہد مصطفیٰ اورمہوش حیات پر فلمایا گیا ہے جس میں دونوں فنکاروں نے گانے کے مزاج کے مطابق تاثرات دیتے ہوئے ڈانس کیا ہے۔فلم کے گانوں میں رنگیا،گڈ لک،منڈے لاہور دے، کوچ نہ کریں اور فقیرہ شامل ہیں۔
٭٭٭
دل موم کادیا“کاٹیزر


اداکارہ نیلم منیرکی نئی ڈرامہ سیریل ”دل موم کا دیا“ کا ٹیزر آن ایئر ہوگیاجس کا آغازنیلم منیر کے ایک مکالمے سے ہوتا ہے”مجھے انتظار ہے ایک شہزادے کا اور نہ تومیں بابرہ ہوں اور نہ ہی شریف“اس ڈرامہ سیریل کی دیگرکاسٹ میںارم اختر،یاسر نواز،عمران اشرف،حرا مانی،محمدقوی خان اور ندا ممتازنمایاں ہیں۔ ڈرامہ کی کہانی سائرہ رضا کے ناول سے ماخوذ ہے جسے شاہد شفاعت نے ڈائریکٹ کیاہے۔سکس سگماپروڈکشن کی اس سیریل کی کہانی ایک ایسی لڑکی کے گرد گھومتی ہے جسے اپنی خوب صورتی پر بہت غرور ہوتاہے اور وہ دنیا کو اپنی جوتی کی نوک پر رکھتی ہے۔نیلم منیر کی شادی اس کی خواہش کے بغیریاسر نواز سے ہوجاتی ہے جہاں سے کہانی ایک نیا موڑ لیتی ہے۔اس حوالے سے نیلم منیر کا کہنا ہے کہ یہ ڈرامہ ناظرین کو ضرور پسند آئے گا ،اس قسم کا کردار میں پہلی بارکررہی ہوں۔
ایک اورپشتوگلوکارہ قتل


خیبرپختونخوا میں ایک اورپشتوگلوکارہ اوراداکارہ ریشم کومبینہ طور پرشوہر نے گھریلو ناچاقی پرتشدد کا نشانہ بناکر قتل کردیا ۔2012ءمیں پشتو کی معروف گلوکارہ غزالہ جاوید کو بھی اس کے شوہر نے باپ سمیت قتل کروادیاتھا۔35سالہ ریشم نوشہرہ کے علاقے جب داﺅد زئی اکبر پور میں رہائش پذیر تھیں اور9 ماہ قبل اس کی وقاص نامی شخص سے شادی ہوئی تھی۔ پولیس نے مقتولہ کی بہن کی مدعیت میں ملزم وقاص کے خلاف تھانہ اکبرپورمیں مقدمہ درج کرلیا ہے جس میںکہا گیا ہے کہ مقتولہ رامین عرف ریشم کے سُسرال سے خبر آئی کہ ان کی بہن کا انتقال ہوگیا ہے اور وہ آکرتجہیزوتدفین میں شرکت کریں لیکن میّت کے غسل کے دوران انہوں نے جسم پرتشدد کے نشان دیکھے توانہیں شک گزراجس پروہ میّت کوقریبی ہسپتال لے گئے جہاں ڈاکٹروں نے موت سے پہلے رامین پرتشدد کی تصدیق کردی۔رامین اوروقاص کے درمیان ناچاقی چل رہی تھی اورکچھ عرصہ قبل دونوں کے درمیان سمجھوتہ کرایا گیا تھا۔
”خفاخفاسی زندگی“مکمل
ڈائریکٹرعاصم علی کی نئی ڈرامہ سیریل”خفا خفا سی زندگی“مکمل ہوگئی اوراسے جلداے پلس سے نشر کیا جائے گا۔ کفایت رودینی اس سیریل کے رائٹرجبکہ نمایاں فنکاروں میںسُنبل اقبال،علی سفینہ،سہیل اصغر،شگفتہ اعجاز،عائزہ اعوان،فرح علی اورحسن نیازی شامل ہیں۔ڈرامہ کی کہانی سنبل اقبال اورعلی سفینہ کے گرد گھومتی ہے،علی سفینہ مڈل کلاس سے تعلق رکھنے والا انسان ہوتاہے جس کی بیوی سنبل اقبال کو اپنے گھر سے زیادہ کیریئر کی فکر ہوتی ہے جس کی وجہ سے ان کی ازدواجی زندگی بے پناہ مشکلات کا شکار رہتی ہے اور نوبت طلاق تک پہنچ جاتی ہے،والدین کے جھگڑے میں دونوں بچوں کی زندگی بہت متاثر ہوتی ہے۔ڈرامہ میںپہلی طلاق سے لے کر تیسری طلاق کے درمیان کی کہانی بیان کی گئی ہے اورساتھ یہ پیغام بھی دیا گیا ہے کہ بچوں کے لئے باپ نہیں بلکہ ماں کی زیادہ ضرورت ہوتی ہے۔
مدیحہ گوہرکوخراج تحسین


اجوکا تھیٹر کی روح رواں مدیحہ گوہر کی یاد میں پروگریسو رائٹرز ایسوسی ایشن کی جانب سے پاک ٹی ہاﺅس میں ایک تقریب کاانعقاد کیاگیا،نامور فنکارنعیم طاہر نے تقریب کی صدارت کی ۔یاسیمین طاہر ، شاہد محمود ندیم ،فریال گوہراور ڈاکٹر صغریٰ صدف بھی اس موقع پر موجود تھیں۔ پروگریسو رائٹرز ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری جاوید آفتاب نے شرکاءکو خوش آمدید کہا جس کے بعد رضا رومی ، نروان ندیم اور اجوکا تھیٹر کے جنرل سیکرٹری سہیل وڑائچ سمیت دیگر شخصیات نے مدیحہ گوہر کی فنّی خدمات کوخراج تحسین پیش کیاگیا۔ان کاکہنا تھا کہ مدیحہ گوہر نے تھیٹر کے ذریعے نہ صرف سماجی موضوعات اور مسائل کی بہترین انداز میں عکاسی کی بلکہ حقوق نسواں سمیت پسے ہوئے طبقات کے حقوق کی سر بلندی کیلئے ہمیشہ سرگرم کارکن کے طور کام کیا۔پروگرام کے آخر میں نروان ندیم اور شاہد محمود ندیم نے اس عزم کا اظہار کیا کہ اجوکا تھیٹر مدیحہ گوہر کے مشن کو جاری رکھے گا اور سماجی شعور سے متعلق تعمیری تفریح کے حامل سٹیج درامے مستقبل میں بھی باقاعدگی سے پیش کئے جاتے رہیں گے۔ برطانیہ کے لندن سکول آف اکنامکس میں بھی مدیحہ گوہر کی خدمات کے اعتراف میں ایک پروگرام کا انعقاد کیا گیا جس میں ایلزبتھ لنچ، سنجے رائے اور عدنان خان نے اجوکاکی بانی کوشاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا۔
ہم دیکھیں گے….
کوک اسٹوڈیوسیزن11کاآغاز


کوک سٹوڈیو کا نیا سیزن 11”ہم دیکھیں گے“ کے ساتھ شروع ہوگیاہے جسے 70ءکے لگ بھگ پاکستانی گلوکاروں نے اپنی آواز دی ہے ۔یہ سیزن علی حمزہ اور زوہیب قاضی پروڈیوس کر رہے ہیں۔”ہم دیکھیںگے“میں عظیم شاعر فیض احمد فیض نے اتحاد،اُمید اور امن کا درس دیا ہے جسے گانے والے 70 فنکار رواں سیزن کاحصّہ ہوں گے،ان گلوکاروں میںعابدہ پروین،ابرارالحق‘احدرضا میر‘ آئمہ بیگ‘ علی عظمت‘علی سیٹھی امرینہ اور ارینا‘ عاصم اظہر‘اسرار‘ عطاءاللہ عیسیٰ خیلوی‘سانول عیسٰی خیلوی،بلال خان،چاند تارا آرکسٹرا‘ایلزبتھ رائے‘ فرید ایاز‘ابو محمد قوال اینڈ ہمنوا‘گل پانڑہ‘حانیہ اسلم‘ حسن جہانگیر‘ حمیرا ارشد‘ جواد احمد‘جمّی خان‘لیاری انڈر گراﺅنڈ بینڈ‘مشال خواجہ‘مومنہ مستحسن‘ نتاشا بیگ‘ریچل ویساجی‘ریاض قادری اینڈ غلام قادری‘ساحر علی بگا‘شجاع حیدر‘ساﺅنڈز آف کولاچی‘دی سکیچز اور دیگر شامل ہیں۔ اس سیزن میں انٹرنیشنل بینڈ EDM بینڈ کریوالا کی پرفارمنس بھی شامل ہوگی۔ کوک سٹوڈیو کی تاریخ میں پہلی بار دو ٹرانس جینڈر گلوکاروں لکی اور نغمہ کی آوازیں بھی شامل ہیں۔ہاﺅس بینڈ کی بھی اس سیزن میں واپسی ہوئی ہے،حانیہ اسلم بھی اس ہاﺅس بینڈ کی رُکن ہوں گی۔وجیہہ نقوی‘ شہاب حسین اور مہر قادر کے بیکنگ ووکلز بھی سیزن کاحصّہ ہیں۔
”جوانی پھرنہیں آنی2“کا”بہکارے“

ہمایوں سعید کی فلم”جوانی پھرنہیں آنی 2“ عیدالاضحیٰ پر ریلیز ہونے جا رہی ہے۔اس رومانٹک کامیڈی فلم کوسلمان اقبال فلمز،اے آر وائی فلمز اورسِکس سگما پلس کے بینر تلے پروڈیوس کیا گیا ہے،کہانی واسع چودھری نے لکھی ہے اورندیم بیگ نے اسے ڈائریکٹ کیا ہے جو اس سے قبل ”جوانی پھر نہیں آنی“اور”میں پنجاب نہیں جا¶ں گی“جیسی فلمیںبھی ڈائریکٹ کر چکے ہیں۔فلم کی مرکزی کاسٹ میں ہمایوں سعید،کبریٰ خان، فہد مصطفٰی،ماورا حسین،واسع چودھری، احمد علی بٹ،ثروت گیلانی اورعظمیٰ خان شامل ہیں۔ سفینا بہروز، کینکا لعل، شہزاد خان،کنول جیت سنگھ،سہیل احمد اورعمر شہزاد بھی اس فلم میںاہم کردار کررہے ہیں۔”جوانی پھر نہیں آنی 2“کی عکس بندی ترکی اوردبئی کی خوبصورت لوکیشنز پرہوئی ہے۔فلم کی کہانی 4 افراد کے گرد گھومتی ہے جس کے ساتھ ایک کے بعد دوسری مزاحیہ صورتحال پیدا ہوتی ہے۔ہمایوں سعید کے ساتھ کبریٰ خان اور فہد مصطفٰی کےساتھ ماورا حسین کی جوڑی ہے۔رومانٹک گانا ”بہکارے“سوشل میڈیا پر کافی پسند کیا جا رہا ہے جس میں ہمایوں سعید‘کبریٰ خان اور فہد مصطفٰی اور ماورا حسین کو ترکی کی خوبصورت لوکیشنز پر دیکھا جاسکتا ہے ،یہ گانا شیراز اُپل نے گایا اور کمپوز کیا ہے جسے 2018ءکا نیا لو اینتھم بھی قرار دیا جا رہا ہے۔ ”بہکا رے“ کے بول شکیل سہیل نے لکھے ہیں،گانے میں ہمایوں سعید اورکبریٰ خان کو ترکی میں سیر کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔
کومل عزیزخان کا”عشق بے نام“


کومل عزیز خان اُبھرتی ہوئی باصلاحیّت اداکارہ ہیں جو” عشق بے نام“میں اپنے کردار کی وجہ سے ہم ایوارڈز میں بہترین سوپ اداکارہ کے لئے نامزد بھی ہو چکی ہیں۔اب وہ ڈائریکٹر علی مسعود کی ڈرامہ سیریل ”بساط دل“ میں مرکزی کردار اداکرنے جا رہی ہیں جس کا سکرپٹ فرحت اشتیاق نے لکھا ہے۔ کومل عزیز خان کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ میں اس سیریل میں عنایا کا کردار کر رہی ہوں جس کے کئی شیڈز ہیں۔”بساط دل“ کی دیگر مرکزی کاسٹ میں شہروز سبزواری اور نوشین شاہ شامل ہیں۔یہ ڈرامہ روایتی لو اسٹوری نہیں نہ ہی ساس بہو کے جھگڑوں پر مبنی ہے بلکہ اس میں ان معاشرتی مسائل کو اُجاگر کیا گیا ہے جن سے لوگوں کو روزانہ سامنا رہتا ہے اور حالات انہیں وہ کام کرنے پر مجبور کردیتے ہیں جو وہ نہیں کرنا چاہتے۔

- admin

admin

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے