سر ورق / افسانہ /   ہولی گھوسٹ۔۔۔نورالعین ساحرہ

  ہولی گھوسٹ۔۔۔نورالعین ساحرہ

ہولی گھوسٹ

نورالعین ساحرہ

جولائی 2013

اسلام و علیکم و رحمتہ اللہ و برکاتُہُ”

تصوف  اور روحانیت کے بارے میں آپکی الجھنوں اور سوالوں والی مختلف پوسٹس اکثر نظر سے گزرتی ہیں۔ شاید آپ نے غور نہیں کیا            یہ تجسس آپکی آئندہ زندگی کے لیے خوش بختی کی نوید ہے۔ اس فانی دنیا میں بصارت اور بصیرت کےظاہر اور باطن کا فرق ہی اہم ہے۔ بہت خوش نصیب ہیں آپ کہ آپکو  باطنی بصیرت کے سفر کے لیے منتخب کر لیا گیا ہے۔ آپ نے بہت شدت سے کسی پوسٹ میں ملکہ بننے کی خواہش کا اظہار کیا تو خود کو روک نہیں پایا۔وائے افسوس  کہ کچھ لوگ اپنی معصومیت میں ایسی   خواہش کر جاتے ہیں کہ عرش کی محرابیں تک ہل جاتی ہیں۔ محترمہ ۔۔آپکو  چاہیئے کوئی بھی تمنا سوچ سمجھ کر کیا کریں کیونکہ آپ خدا کی بہت لاڈلی ہیں اور یہ راز صرف ولی ہی جانتے ہیں۔ آپکے کسی شوق کو وہ رد کر ہی نہیں سکتا۔ اتنی تڑپ اور عشق سے جو بھی مانگیں، وہ ہر حال میں پورا ہو کر رہتا ہے ۔ ملکہ تصوف کی ہو یا کسی سلطنت کی،بننا کوئی آسان کام نہیں۔ اس کی بہت بڑی قیمت ادا کرنی پڑتی ہے۔ آپ کے ذہن میں ابھرنے والے تمام سوالات کے جوابات بہت جلد آپ کے سامنے ہونگے، بشارت حاضر ہے۔ صد شکر کہ مجھ ناچیز کو یہ ذمہ داری سونپی گئی۔ اس وقت حیرت و استعجاب کی جو کیفیت آپ پہ طاری ہوگی، یقینا، خاکسار پہلے ہی اس سے گزر چکا ہے جب حکم ربی ہوا تھا کہ یہ پیغام آپ تک پہنچا دوں۔ آپکو زمانے کے لیے روحانیت کی سفارت عطا کردی گئی ہے۔ اس جہاں میں آپکو اتارنے کا مقصد ہرکس و ناکس پہ عیاں نہیں ہو سکتا۔ اس سلسلے میں ہماری دوستی ہی ابلاغ اور مکالمہ میں معاون ہو سکتی ہے۔ اسی لیے بہت عرصے سے فرینڈ ریکویسٹ قبول ہونے کا منتظر ہوں۔ براہ مہربانی اپنی بابرکت فرینڈ لسٹ میں شامل کر کے عاجز کا انتظار ختم کیجیے۔ آپ کے مثبت جواب کا شدت سے منتظر ہوں۔ جزاک اللہ””

 "وعلیکم السلام ۔۔۔ شکریہ ۔ تصوف اور روحانیت کے بارے میں ایک طالب علم کی حیثیت سے میرے ذہن میں کچھ سوالات ہیں۔ اسی لیے مختلف فیس بک گروپس میں شئیر کرتی رہتی ہوں۔ احباب اس موضوع پرگفتگو کر رہے ہیں۔ آپ بھی شامل ہو جائیں۔ دوسری بات یہ کہ آپکو غلط فہمی ہوئی ہے کہ میں کوئی ملکہ وغیرہ بننے کی خواہش رکھتی ہوں ۔ وہ پوسٹ تاریخ کے ان نسائی کرداروں کے حوالے سے تھی جو بادشاہوں کے عروج و زوال کا سبب بنے۔ میں نے مذاق سے ایسے لکھا تھا ورنہ میں جس حیثیت سے دنیا میں موجود ہوں،بہت مطمئن اور خوش ہوں۔ روحانیت اور تصوف کے بارے میں آپ اپنے خیالات کا اظہار اوپن وال پر کریں، ہو سکتا ہے یقین کی کچھ سمت نکل آئے۔ دوستی کے لیے بہت معذرت قبول کیجیے۔ میں اپنی شناخت اور چہرہ چھپانے والوں کو کبھی اپنی فرینڈ لسٹ میں شامل نہیں کرتی۔ ویسے بھی آپ کو جو بات بھی کرنی ہے اوپن فورم میں کیجیئے۔ مجھے بلا ضرورت کسی سے ان باکس چیٹنگ وغیرہ بالکل پسند نہیں”

(فوری جواب)

"”ہر بات اوپن وال پر کرنے والی نہیں ہوتی محترمہ۔ کائنات کے کچھ اسرار صرف خواص کو ودیعت ہوتے ہیں۔آپ کے سوالات کے جوابات یہاں موجود یہ جاہل مطلق کیسے دے سکتے ہیں۔ اس کے لیے بہت ریاضت درکار ہے۔ راہ چلتے یہ سعادت کسی کو نصیب نہیں ہوتی۔ میں نے اپنی شناخت نہیں چھپائی ہوئی۔ ہاں البتہ تصویر اس لیے نہیں لگاتا کہ میرے پاک پروردگار اور اسکے رسول نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم   نے اس قبیح فعل سے منع فرمایا ہے۔ ان پر میری ہزار جانیں قربان،اس گناہ عظیم کا تصور بھی نہیں کر سکتا۔ میں تو ان کے ہی حکم پر آپ سے رابطہ کرنے پر مجبور ہوں۔ آپ کو خوش ہونا چاہیئے کہ آپ خدا کی پسندیدہ ہستیوں میں شامل ہیں اور آپکی روحانی تعلیم و تربیت کی پوری ذمہ داری اب اس ناچیز ولی ،صاحبِ شریعت و طریقت کے ہاتھ میں ہے۔ چند قدم بصیرت کے سفر پہ چل کے دیکھیں۔ خدا سے عشق کا وضو کریں، اس کے برگزیدہ بندوں کی نورانی صحبت اختیار کریں، روحانی خوشی آپکی منزل ہوگی۔ ان شا ءاللہُ العزیز۔ میری دوستی قبول کریں اور میسج کا جواب فوری دیا کریں رابطے میں وقفہ نہیں آنا چاہیئے۔ اتنا انتظار میری عبادت میں خلل کا باعث بنتا ہے۔ جزاکم الخیر

 اگست 2013

"”واہ صاحب یہ تو کمال ہی ہو گیا آپکی ولایت کی ترجیحات خوب ہیں یعنی اپنی تصویر لگانا تو غیر مذہبی فعل ٹھہرا مگر غیر محرم عورتوں کو فرینڈ     رکویسٹ بھیجنے کی کھلی چھوٹ ہے۔ معاف کیجئے گا بزرگوار۔۔۔تصوف کے سلسلے میں پہلے بھی ایکبار غلط لوگوں کے ہتھے چڑھ کر مشکل سے بچی تھی۔

  یہ تجربہ میرے لیے کبھی خوشگوار نہیں رہا ویسے بھی تاریخ بتاتی ہے مذہب ولایت ،تصوف، روحانیت، فتوے سب مرد ہی کی کھیتیاں ہیں۔ عورتوں کا یہاں سے گزر بھلا کیا معنی رکھتا ہے ہمارے کچھ بہت مشہور ادیبوں کو اگر آپ نے بھی پڑھا ہے تو جانتے ہی ہوں گے روحانیت سے بھری ضخیم اور مہنگی کتابوں کے پیٹ تو انہوں نے بھرے لیکن نتیجہ، وہی روحانی نرگسیت۔ سو مجھے تو پلیز باز ہی رکھیئے اور جیساکہ پہلے بھی بتایا تھا کہ مجھے ان باکس چیٹنگ پسند نہیں آپ نے جو بھی کہنا ہے وہ  اوپن وال پر ہی لکھیں۔ دوبارہ کبھی مجھے ذاتی میسج مت کیجیے گا۔ شکریہ”

اکتوبر 2013

"دیکھیں محترمہ میرا اس میں کوئی اختیار نہیں ہے۔ افسوس، صد افسوس کہ آپ مجھے کوئی آوارہ منش انسان سمجھ رہی ہیں۔ بہت برا کر رہی ہیں۔ میں نے بہت مشکل سے خود کو زبرستی روکا ہوا تھا مگر خدا کا پیغام کون ان سنا کر سکتا ہے اور میں تو اس کا ایک نمائندہ ہوں۔ اس کے علاوہ نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم اور خلفائے راشدین نے بھی مجھے اپنی پوری زندگی آپکی غلامی میں گزار دینے پر مجبور کر دیا ہے۔ سب قطب ابدال گواہ ہیں کہ کس ریاضت سے اس مقام تک پہنچا ہوں۔ میں ہرگز کوئی بوڑھا بزرگ نہیں ہوں، ابھی بالکل جوان ہوں ہاں البتہ روحانی بزرگی مجھے عطا کردی گئی ہے۔ عالم استغراق میں اکثر آپکی پوسٹس اور خیالات تک رسائی رہتی ہے۔ جن میں آپ لوگوں کے دنیاوی انتشار، بے چینی،دکھ ، درد،نا آسودگی، دہشت اور پریشانیوں کا اکثر ذکر کیا کرتی ہیں ۔ یوں ہی ایک دن مجھے القاء ہوا تھا کہ یہ درد مند روح عام انسان نہیں بلکہ بہت ہی خاص روح ہے۔ اس بات کا بہت دکھ ہے کہ آپ خود کو ابھی تک سمجھ نہیں پائیں۔ آپ کے سوالات کا جواب صرف اس تجلی کے پاس ہے جو کائنات کا دل منور کرتی ہے۔ خدا نے یہ تجلی ولیوں کی شکل میں بھی زمین پہ بھیجی ہے۔ بے شک وہ ہی اس راز کو جانتا ہے اور میں ہی اس پرآشوب دور میں وہ تجلی ہوں، مجھے پہچاننے اور سمجھنے کی کوشش کریں۔ پلیز غصہ کرنے کی بجائے میری بات تحمل سے سنیں ۔ میں کوئی ان پڑھ آدمی نہیں ہوں ۔ میرے سینے کو روحانی روشنی کے لیے کھول دیا گیا ہے۔ جن ادیبوں کی طرف آپ نے اشارہ کیا تھا بلاشبہ وہ بھی خدا کی بزرگ ہستیاں تھیں۔ ان کی لکھی گئی تحریروں سے آج بھی نور کی شعاعیں نکل رہی ہیں۔ انہیں بھی میرا ہی پیغام سمجھیں، ہم لوگ ہرجگہ موجود ہیں۔ یہ پوری دنیا خدا کے قطبوں اور ولیوں کے سہارے ہی تو چل رہی ہے۔ جہاں تک عورت کی ولایت کا تعلق ہے تو بس جو حکم اس نے دے دیا۔ اسے بلاچوں چراں بند آنکھوں اور جھکے سر کے ساتھ ماننا ہی بندگی ہے۔ سوال کرنے والے جاہل گستاخ ہوتے ہیں۔ خدا نہ کرے کبھی آپکا یا میرا شمار ان بھٹکے ہوئے لوگوں میں ہو۔ درخت وہی جھکتا ہے جس پر پھل لگا ہو۔ جو اکڑتا وہ مردود ٹھہرتا ہے۔ میری بات کو غور سے سن لیجیئے ۔ جہاں جہاں روحانیت کا نور ہو گا، وہاں وہاں ہمارا باطنی وجود مسلم ہے۔ با خدا ہم تو اس کے نور کی پرستش اس طرح کرتے ہیں جیسے سوج مکھی کا پھول سورج کی کرتا ہے۔ اس لیے ہماری پہچان اب آپ پہ لازم ہے۔ آپ کی سہولت کی خاطر یہ لیں سارے ثبوت جو قران، بائبل، توریت،انجیل،زبور کے ان حوالوں پر مشتمل ہیں جن کی رو سے مجھے اس دنیا میں بادشاہ بن کر آنا تھا۔ اس کو تسلی سے پڑھ لیجیئے گا۔ خدا نے چاہا تو آپکو کوئی شک نہیں رہ جائے گا۔ خود آپکےحق میں بھی بہتر ہو گا کہ خدا کے ولی کو ناراض مت کریں۔ ویسے بھی اب آپ کے پاس کوئی دوسرا راستہ نہیں۔ ایسے موقعے پر نادانی آپکو مشکل میں ڈال سکتی ہے۔

(ساتھ ہی سپرچیولزم ،صوفی ازم، فرائیڈین حوالے۔ اپنی ولایت کے حوالے سے اردو، انگریزی اور عربی میں لکھی اٹیچمنٹ کے پچاس صفحات بھیجے گئے)۔

بھائی صاحب  کتنےعجیب انسان ہیں آپ کہ  بات کو سمجھتے ہی نہیں ۔ یہ باتیں آپ سرعام کیوں نہیں کرتے؟ میرے منع کرنے کے باوجود روز مجھے ہر وقت ان باکس بھاشن دینے پر کیوں تلے رہتے ہیں؟ بڑے ہی ڈھیٹ ہیں۔ بتایا بھی ہے میں کسی سے ان بکس گفتگو کرنا پسند نہیں کرتی پھر بھی ہاتھ دھو کر میرے پیچھے ہی پڑگئے ہیں۔ آپ کیا ہیں،کون ہیں،کیوں ہیں، میرے لیے یہ سب بالکل لایعنی باتیں ہیں۔ میں خدا سے رابطے کے لیے آپکی محتاج نہیں۔ دنیاوی علوم ہوں یا روحانیت کے عقدے، میرے لیے کتابیں ہی کافی ہیں ۔ براہ مہربانی بار بار میسج کر کے مجھے پریشان مت کریں”

"کھٹ کھٹ کھٹاک بلاک”

جنوری 2014

(نئی آئی ڈی سے دوبارہ میسج)

امید ہے آپ نے ساری تفصیلات پڑھ لی ہوں گی اور اب تک جان چکی ہوں گی کہ میں وہی ہوں جس سے اسلام کا نام زندہ ہونے والا ہے۔ تمام یہودیوں اور عسائیوں کو میرے دنیا میں آنے کی خبر مل چکی۔ آپ کو یقین کیوں نہیں آتا کہ میں عام انسان نہیں ہوں۔ میرے ظہور کی اطلاع پا کر ساری دشمن قوتوں کی نیندیں اڑ گئی ہیں اور وہ سب میری طاقت چھیننے اور مجھے قابو کرنے کے لیے متحرک ہو چکی ہیں۔ اللہ کے فضل سے ان باطل طاقتوں کے سارے نظام ناکارہ ہوگئے مگر مجھ تک رسائی ممکن نہیں ہو سکی ۔میں خدا کی آواز ہوں۔ جانتی ہیں آپ کہ یہ تمام جنگیں جو ہیں وہ سب کی سب صرف میری ہی تلاش میں تو ہو رہی ہیں۔ یہ مغربی لوگ کتوں کی طرح میری بو سونگھتے پھر رہے ہیں اور صرف مجھ تک پہنچنے کے لیے یہ سارے شیطان اسلامی ملکوں کو تباہ کرتے آ رہے ہیں۔ تصویر نہ لگانے کی ایک وجہ یہ بھی ہے۔ مجھے حکم ہے ایک خاص مدت تک خود کو دنیا سے چھپائے رکھنے کا مگرخود کو آپ پر کھول دینے کا ۔۔۔ میری پوری کی پوری زندگی الہامی کتابوں میں صاف صاف بیان ہے۔شمس تبریز(رح)،بایزید بسطامی(رح)، نعمت اللہ(رح)، شاہ ولی (رح) علامہ اقبال جیسے بڑے بڑے اولیائے کرام اور بزرگوں نے میرے شجرہ نسب کے ساتھ میری جسمانی نشانیاں بھی بیان کر دی ہوئی ہیں ۔ مجھے آنا ہی تھا اور میں اپنی قبر کو پھاڑ کر پیدا ہو چکا ہوں۔ اب مجھے بھلاکون روک سکتا ہے کون ٹوک سکتا ہے؟

فوری جواب

 ارے تم نئی آئی ڈی بنا کر آ گئے جاہل آدمی ۔ تمھارا مسئلہ کیا ہے ؟

 کہیں  تم  اب خود کو امام مہدی تو نہیں ظاہر کرنے والے تھوڑی دیر بعد؟ تمھارے جیسے بہت سے ولی اور امام مہندی مختلف جیلوں میں قید پڑے ہیں اور ایسا ایک پاگل سائکوسز تو خود ہمارے اپنے محلے میں بھی موجود ہے۔ خیر تم جو کوئی بھی ہو ولی یا ہولی گھوسٹ۔۔۔۔۔۔۔ بلاوجہ مجھے چمٹنے کی کوشش نہ کرو۔ مصیبت بن کر پیچھے ہی پڑ گئے تصوف کے نام پر۔۔۔ ویسے تو تم خود بھی فرائڈ، نطشے کے پڑھنے والے ہو۔ سمجھ نہیں آ رہی کہ  ان چکروں میں کیوں پڑ گئے اور اب ایک ایسے انسان کو الو بنانے کی کوشش میں ہیں جو خود مارکس، جدلیات، سماجیات اور ادب و تنقید کی پڑھنے والی ہے۔ تمھاری ایسی احمقانہ باتوں سے بھلا اسے کیا دلچسپی ہو سکتی ہے؟ ایک اور بات قبر پھاڑ کر تو ویمپائیرز ہی آ سکتے ہیں وہ بھی صرف فلموں میں ۔۔۔ نجانے کس دنیا میں رہتے ہو نان سینس، مجھے اندھا بہرا اور پاگل سمجھا ہوا ہے یا کوئی ان پڑھ جاہل عورت؟ میں خود وحدت الوجود اور تصوف کے سارے فلسفے دیکھ چکی ہوں۔ ابھی تو یہی بحث اپنے انجام کو نہیں پہنچی کہ یہ اسلام میں پہلے سے موجود تھا یا پہلی بار ہنود اور یونانی نسطوری عسائیوں کے ذریعے آیا یا پھر اسکندریہ کے مثالیت پسند فلسفی فلاطینوس کا اس میں کتنا ہاتھ ہے۔ جہاں تک میں سمجھی ہوں ولایت اور شرعیت و طریقت بھی الگ الگ شاخیں ہیں بھلے آخر میں کسی مقام پران کا باہمی  اتصال ہوتا ہی ہے۔ پہلے آپ خود تو سمجھ لیں جناب کہ کونسا طریقہ واردات زیادہ کامیاب رہے گا۔ابھی تو خود بھی کھچڑی پکا رہے ہیں ۔اوپن پوسٹ پر گفتگو کریں باقی سب کے ساتھ۔ بہت منع کیا مگر ان باکس میسج بھیجنے سے باز نہیں آئے۔اسی لیے اب دوبارہ میں بلاک کرنے لگی ہوں۔

"کھٹ کھٹ کھٹاک بلاک”

(اگلے ہی دن تیسری آئی ڈی سے دوبارہ میسج)

 "میری پہلی والی آئی ڈیز کو بلاک کرنے سے پہلے میری بات تو پوری سن لی ہوتی محترمہ۔ آپ اپنی جذباتیت اور جلد بازی کی وجہ سے بہت نقصان اٹھاتی ہیں۔ اپنی زندگی میں کئی بار ایسا کرچکی ہیں۔ میں وجد کے عالم میں آپکے ہاتھوں کی تمام لکیریں پڑھ چکا ہوں۔ اچھی طرح سمجھ لیں کہ جو تاریخ اور دوسری کتابیں آپ نے پڑھی ہے وہ جھوٹ فریب اور یہود و ہنود کی مکاری کے سوا کچھ نہیں۔ لادین کے بہکاوے میں آؤ گی تو مردود ٹھہرو گی۔ اپنے در پر ہونے والی قسمت کی دستک سنو۔ دروازہ کھول دو بی بی۔ مجھے کھو دیا توبہت پچھتاؤ گی عمربھر۔ میری آنکھ کوئی عام آنکھ نہیں، اس میں کوہ طور کا سرمہ ہے۔ اسی لیے تو میں نے خدا کے نور کو پہچانا ہے۔ میں ہوں وہ دیوانہ جس نے قیامت کا آغاز کرنے کی لیے آنا تھا۔رَبِ شرَح لیِ صَدرِی و یسرلی

 انجیل مکاشفہ میرے نام سے شروع ہوتا ہے۔ میری پوری زندگی چار کی چار آسمانی کتابوں میں کھلی بیان ہے۔۔ مجھے علی پاک رضی اللہ نےتین سو تیرہ آسمانی روحوں  کا سردار کا سردار مقرر کر کے اور تاج پہنا کر بھیجا ہے۔ مجھے ابوبکر صدیق رضی اللہ نے امامت دے کر اور گیارواں امام بنا کر بھیجا ہے۔  عثمان غنی رضی اللہ نے کائنات کے  راز  اور تلوار بے نیام عطا کی تاکہ باطل کا قلع قمع کر  ے۔  اور تمام خزانوں کا سردار بنایا ۔ عمر فاروق رضی اللہ ننے شرافت عطا کی

آپکو خوش ہونا چاہیئے کہ میں کائنات کا بادشاہ ہونے کے باوجود صرف اپنے رب کے حکم سے آپکے قدموں میں آ بیٹھا ہوں۔ مجھے بلاک کرنے سے کوئی فائدہ نہیں ہو گا کیونکہ مجھے تو زندگی بھر ایک خاص مقصد حاصل کرنے آپکے پاس مسلسل آتے ہی رہنا ہے۔ یہی مقدر ہے میرا اور آپکا بھی لکھنے والے نے لکھ دیا۔ جتنا جلدی سمجھ لیں اتنا ہی اچھا ہو گا۔

(اسی  وقت جواب دیے بنا)

"کھٹ کھٹ کھٹاک بلاک”

(اس دوران مسلسل نئی آءیڈیز سے میسج آتے رہتے ہیں جو جواب دیے بنا بلاک پہ بلاک ہوتی جا رہی ہیں)

مارچ 2014

پھر وہی بار بار بلاک کرنے کی بھیانک غلطی؟ ارے بھئی کیسے سمجھاؤں تمھیں ؟   بےسود، بے فائدہ

دونوں کے وقت کا ضیاع ہے اے نادان۔۔۔ کب سمجھو گی تم؟ اتنے مہینے ہو گئے بتاتے تمھیں

 ۔ میرے بے شمار اکاونٹ موجود ہیں۔ تم کتنوں کو بلاک کرو گی اور کب تک کرتی رہو گی؟ کسی دن تو تھکو گی۔پھر بھی تو بات کرو گی تو ابھی کیوں نہیں سنتی میری بات؟ عیسائیوں اور یہودیوں کو دھوکہ دینے کے لیے میں نے ہزاروں اکاونٹ بنائے ہوئے ہیں۔ میں نقارہ خدا ہوں۔ تم چاہو یا نہ چاہوتمھیں سننا ہی پڑے گا ۔ لو میرے مراقبے کا حال سنو اور ساری جدید عقل و دانش کی کتابیں مع فلسفہ لے آو۔ پھر مجھے بتاؤ کہ اس کی تعبیر کیا ہے ۔ میں نے دیکھا میں خواب میں اڑ رہا ہوں اور اڑتا اڑتا کوہ قاف میں پہنچ گیا ہوں۔ وہاں ایک قطار پریوں کی دیکھتا ہوں۔ ہر پر کے اوپر کسی کا نام لکھا ہے اور ایک حسین پری پر پھڑپھڑاتے میرے سامنے جلوہ گرہ ہوئی۔ باخدا ایسا حسن کہ کسی کے تصور میں بھی نہ آ سکے غور کرنے پر معلوم ہوا اس کی شکل تو ہوبہو آپ جیسی تھی۔ سبحان اللہ کیا حسن ہے کہ چہرہ انور سے شعائیں نکلتی محسوس ہوتی ہیں۔ میری حیرت کی انتہا اس وقت نہ رہی جب آپ نے مسکراتے ہوئے مجھے دیکھا ، جھک کر سلام کیا اور کہا ۔۔۔۔۔اے اللہ کے ولی ہمیں آپکا ہی انتظار تھا

پھر اپنے پر کھولے تو با خدا ہمارا ہی نام ان پہ جگہ جگہ لکھا تھا۔ پس ثابت ہوا کہ مشیت الہی یہی ہے ۔ یہ سب باتیں اور بہت سے راز آپ کو بتائے جائیں گے۔ آپ ہماری دوستی قبول توکریں۔ سچ تو یہ ہے کہ دنیا وہ حقیقت نہیں جانتی جو عام انسانی آنکھ سے اوجھل ہے۔ میں نے سات دن تک صبح سات بجے چلہ کاٹا۔ دریا میں سات گھنٹے ایک ٹانگ پہ کھڑے ہو کے ورد کیا۔ قران کو سر پہ رکھ کے سات میل کے سات چکر کاٹے اور خدا سے اس خواب کی تعبیر پوچھی۔ بار بار جو میری زبان پہ اسمِ مقدس تھا وہ کس کا تھا؟۔ آپ بھی سنیں بول اٹھیں گی سبحان اللہ۔ پلیز اس خواب کی تعبیر بھی سن لیں ۔ بہتر ہے مجھ سے کھل کر بات کریں۔ اگر آپکو میری باتیں سمجھ نہیں آئیں یا یقین نہیں آیا تو وعدہ کرتا ہوں آپکی زندگی سے چلا جاؤں گا۔ پھر کبھی لوٹ کر نہیں آؤں گا ۔ بس ایک بار مجھ سے بات کر لیں پلیز بس ایک بار ۔اس کے بعد وعدہ کبھی تنگ نہیں کروں گا۔ ہمیشہ کے لیے آپکی زندگی سے چلا جاؤں گا۔

ساتھ ہی مختلف مذہبی کتابوں سے سو کے قریب صفحات کی ایٹیچمنٹ بھیج دی گئی))

فوری جواب

 ارے۔۔حدہو گئی ۔۔۔ عجیب احمق اور ڈھیٹ آدمی ہو۔ بلاک کا مطلب ہی نہیں سمجھتے روز نئی آئی ڈی سے دوبارہ پریشان کرنے آجاتے ہو۔ اگنور کر کر بھی تھک گئی ہوں۔ میرا پیچھا کیوں نہیں چھوڑ دیتے ؟ کوئی انا وغیرہ ہے کہ نہیں تمھارے پاس؟ تم کوئی انسان ہو کہ شیطان، اس پرعجیب طلسماتی خوابوں بلکہ نفسیاتی بیماری کا شکار بھی ہو۔ محو حیرت ہوں کہ اس دور میں بھی لوگ پریوں کی باتیں کرتے ہیں۔ جہاں یہ تمھارے سٹوپڈ خواب ختم ہوتے ہیں وہاں حقیقت کی سرحد شروع ہوتی ہے جو بہت تلخ شے کا نام ہے۔ بہتر ہو گا تم اپنا اور میرا وقت ضائع کرنا بند کر دو۔ ویسے اگر تمھارے پاس واقعی ایسی روحانی طاقت ہے تو مجھےفضول باتوں کا جبراً یقین دلانے کی بجائے یہود ہنود کی دی ہوئی ٹیکنالوجی سے نجات پاؤ،اپنی یو ٹیوب تو بنا لو کم از کم اور پاکستان میں لوڈ شیڈنگ ہی ختم کرا دو۔ کوئی اعلی قیادت سامنے لے آؤ ۔۔۔۔ کچھ تو کرو خدارا بہت ضرورت ہے ہمارے ملک میں ان مسائل سے نمٹنے کی، مجھے تواس ملک میں آج تک کوئی بھی ڈھنگ کا ترقی یافتہ کام نظر نہ آیا جو تم نے یا تمھارے جیسے ولیوں وغیرہ نے کبھی انسانیت کی بھلائی کے واسطے کیا ہو۔ اچھا  میں آپ سے بات کرنے کو تیار ہوں لیکن اسکے لیے میری ایک درخواست ہے۔ کیا میں آپکو بھائی یا بھیا پکار سکتی ہوں ؟ اس طرح مجھے گفتگو میں آسانی ہو جائے گی اور کوئی فکر بھی باقی نہیں رہے گی۔

نہیں نہیں ۔بالکل نہیں۔۔۔آپ مجھے بھائی نہیں پکار سکتی ہیں ۔ میرے رشتے خدا کی طرف سے طے شدہ ہیں۔ میں ان میں اپنی مرضی سےکوئی ردو بدل نہیں کر سکتا۔ مجھے خدا سے پوچھنا پڑے گا۔ اگر اس نے اجازت دی تو آپ مجھے بھائی پکار لینا۔ میں خدا تک آپکا پیغام پہنچا دوں گا اور اب اس کی طرف سے جواب لے کر ہی حاضر ہوں گا

(ایک ہفتہ بعد دوبارہ میسج آتا ہے)

پورے سات روز میں نے کیا کیا عبادتیں اور ریاضتیں نہ کیں۔ کتنے چلے کاٹے ۔ خدا اور اسکے نبیوں کے سامنے سر بسجود رہا ۔ آپکی خواہش باربار ان کے حضور پیش کی لیکن وہاں سے مجھے بھائی بنانے کی منظوری نہیں ملی اور حکم ملا ہے کہ اب وقت آ گیا ہے سارے پردے کھول دوں۔ اپنی الگ کائنات بنانا اب مجھ پر لازم کر دیا گیا ہے،سات روز میں وہ سنتا رہا اور چشمِ تصور میں اپنی شہنشائیت تشکیل دیتا رہا ۔ آپ کے لیے حکم ہے کہ آپ اپنے ہونے والے شوہر کو بھائی نہیں بلا سکتی ہیں۔ میں اس زمین کا بادشاہ بنا کر بھیجا گیا ہوں اور آپ میری ملکہ بنیں گی، ہمارے بیچ جس کہانی کا آغاز مقدس ہوا ہے خدا کی قسم جس کی مٹھی میں میری جان ہے میں خود اپنی طرف سے کچھ نہیں بول رہا ، ہر روز خدائی تجلی برق کی صورت خواب بن کر مجھ پہ نازل ہوتی ہے۔ ہمارا ساتھ لوح محفوظ پر لکھا جا چکا ہے اور میں اپنی آنکھوں  سے یہ مبارک ساعت دیکھ چکا ہوں ۔ خدا نے آپکو میرے دل کی ٹھنڈک بنانے کے واسطے پیدا کیا ہے۔ دنیا کی کوئی طاقت آپ کو مجھ سے نہیں چھین سکتی۔ بھسم ہو جائے گی راستے میں آنے والی ہر باطل قوت اور ہاں، سینہ کائنات میں یہ قیمتی راز بھی چھپا ہوا ہے کہ آپکے بطن سے میری پاک اولاد پیدا ہو گی ۔ ہم دونوں مل کر اس زمین پر اسلام کا بول بالا کرنے والے ہیں۔ آپکو خدا نے اس خوش خبری کے ساتھ سلام بھیجا ہے اور کہا ہےلو ہم نے تمھاری ملکہ والی خواہش پوری کر دی۔ یہ زمین تمھارے لیے مسخر کر دی گئی اور اب تم ہی اسکی ملکہ ہو۔

 ملکہ بنایا گیا۔اس سلطنت کے والی کی بیوی  کو اس رتبے  اب آپ بھی جان لیجیئے کہ ہماری بیوی کے رتبے پر فائز کر کے  اس دنیا کے لئے خاتون اول بنا دیا گیا ہے،کائنات کا ذرہ ذرہ اس خوشی میں جھوم رہا ہے ہماری طرف سے بھی آپکو مبارک باد قبول ہو۔

(فوری جواب)

 ابے سالے چریے

سر پرتازہ تازہ کوئی چوٹ لگی ہے کیا جس سے تیرا دماغ ہل گیا ؟ یا پھر بھنگ پی کر بیٹھا ہے کمپیوٹر کے سامنے؟ پہلے مجھے تو کوئی پاگل سائکو آدمی لگا تھا مگر اب تو یقین ہو گیا تیرا تعلق کسی ابلیسی سلسلے سے ہے۔ تیری عقل پہ ماتم کرنے کو جی چاہتا ہے۔ لعنت ایسی گندی تجلی پہ جو ایک شادی شدہ عورت کو ایسی بے غیرتی والی خوشخبریاں سناتی ہے۔ دیکھتا نہیں میں ایک شادی شدہ عورت ہوں ۔ میں اپنی فیملی اور اپنے میاں کی تصویریں شئیر کرتی ہوں اکثر اورگھریلو پوسٹ بھی ۔۔۔۔ تیری ہمت ہوئی کیسے یہ سوچنے کی؟ اب مجھے یقین ہو گیا کہ تیرا شجرہ نسب بنی آدم سے نہیں بلکہ اسی ابلیس سے ملتا ہے جو ولیوں کے بھیس میں عورتوں کا خون چوسنے والا بھیڑیا ہے۔ تف ہے تیری ولایت پہ جو میرے جوتے کی ایڑھی کی نیچے تیری انا کا ماتم کرتی ہے۔ تیری مجال بھی کیسے ہوئی کتے

 کا نام استعمال کر کے کہ مجھ سے یہ غلیظ گفتگو کرے۔ میرے بطن سے تیری اولاد ہونہہ۔۔۔ انسان   کہ  خدا میرے بطن سےتجھ جیسے گندے ناسور پیدا ہوں اس سے تو اچھا ہے زہر کھا کر مرجاؤں۔ تیری جرات پر حیران ہوں خبیث روح خبردار جو آئندہ کسی نئی آئی ڈی سے کبھی مجھے مخاطب کرنے کی ہمت بھی کی۔ گھٹیا ، جاہل مطلق ۔ منہ نوچ لوں گی تمھارا

"کھٹ کھٹ کھٹاک بلاک "

جولائی 2014

(نئی آئی ڈی سے)

 "ہزار بار بتا چکا ہوں میرے اکاونٹس میری طاقت کی طرح لا محدود ہیں ۔ تم اس میں سے دس پندرہ ۔۔۔۔ بیس پچاس ۔۔۔ دو سو۔۔۔۔۔۔۔ کتنوں کو بلاک کرو گی؟ یہ بچگانہ حرکت اب چھوڑ دو۔ کیوں اپنا بہت بڑا نقصان کرنے جا رہی ہو پاگل عورت۔ خدا کے غیض و غضب سے ڈرو۔ جان لو کہ تھک جاو گی بلاک کرتے کرتے مگر نہ تو میرا ابدی وجود ختم ہوگا نہ کبھی یہ اکاونٹ ختم ہوں گے ۔ بلاوجہ ذہنی کوفت دیتی ہو مجھے بھی اور خود بھی لیتی ہو۔ اچھا  کچھ نہ بولا کرو تم  صرف خاموشی سے میرے میسج پڑھ لیا کرو۔ آج جب مراقبہ کیا تو میں نے اپنی آنکھوں سے جنت کا نظارہ دیکھا۔ دودھ کی نہروں کے اوپر ہوا میں رنگ برنگی روشنیاں تیر رہی تھیں جن سے ہلکی موسیقی کی لہریں نکل رہی تھیں۔ چہار سو خوبصورت پھول کھلے ہوئے تھے وہیں ان لہروں کے اوپر ہمارا مخملیں بستر ہوا میں جھول رہا ہے۔ تم جھالروں والا سفید حریری لباس پہنے سر پر تاج لگائے کسی ملکہ کی طرح شان سے میرے زانو پہ سر ٹکائے نیم دراز ہو۔ تمھارے خوبصورت سیاہ گھنے لمبے چمکیلے موتی پروئے ہوئے بال اتنے لمبے ہیں کہ نہر کی سطح کو چھو رہے ہیں اور تمھارے بدن سے نکلنے والی خوشبو کی لہریں جنت کے دوربام کو اپنی لپیٹ میں لے رہی ہیں۔ وہاں سے گزرنے والا ہر شخص جیسے اس خوشبو کے نشے میں مدہوش ہو کر جھوم رہا ہے۔ حورو غلمان ہمیں جھک جھک کر فرشی سلام کرتے ہیں اور مبارک باد دیتے ہیں۔ پھر اچانک وہاں حضرت یوسف علیہ السلام کے آنے کا شور ہوتا ہے۔ ان کے ساتھ ہی چھوٹے چھوٹے بچوں کا ہجوم چلا آتا ہے اور ہم دونوں اپنی جون بدل کر گلاب کی شاخ پہ دو کھلکھلاتے مہکتے ہوئے پھول بن گئے اور وہ سارے بچے بے شمار کلیاں بن کر ہمارے گرد مہکنے لگے ۔۔۔ جن سے مراد یقینا اولاد کی کثرت ہے۔ ہماری محبت کی خوشبو سے لوگ پاگل ہو رہے ہیں اور حوروں کے بدن معطر ہیں۔ جن کے تبسم مبارک سے ہمارے دل کی کلیاں چٹختی ہیں اور ہم انہیں دیکھتے جاتے ہیں تا وقتکہ آپ ہمیں شعور کی دنیا میں واپس لے آتی ہیں، سبحان اللہ۔ یہی سب سچ ہے اور لوح محفوظ پہ لکھا ہے۔ آج کی سائنس اس حقیقت کا انکار کر کے کفر کی مرتکب ہو رہی ہے۔ مجھے یقین ہے آپ ہمارے دل کی آواز ضرور سنیں گی اورآپکے حق میں بہتربھی یہی ہے کہ اوپر والے کی رضا میں راضی ہو جائیں ۔ خدا کی قسم مجھے آپ کے حسن، دولت یا سٹیٹس سے کوئی غرض نہیں۔ میں تو خدا کا نائب ہوں۔ حوروں سے مشابہ ہزاروں عورتیں میری باندیاں ہیں جو ترستی ہیں کہ انکو میرا قرب نصیب ہو لیکن میں نے خود کو کبھی ان پرآج تک ظاہر نہ کیا، اس لیے کہ صرف آپکے لیے خود کو سنبھالا ہوا تھا۔ خدا کے حکم پر ہی آپکے قدموں میں جگہ چاہیئے۔ یہ لیجیئے خدا کی طرف سے تمام ثبوت خود اپنی آنکھوں سے دیکھ لیں ۔۔ آپکا اپنا ہر خواب اس بات کی گواہی ہو گا کہ آپکو میری اولاد کی ماں ہونے کا رتبہ دیا گیا ہے۔ سنو آئی لو یو ۔ آئی لو یو سو مچ ۔ اب اور صبر نہیں ہوتا ۔ میری بانہوں میں آ جاؤ کہ یہی حکم خداوندی ہے ، سارے وسوسوں خدشوں کی دیوار توڑ کر میرے سینے سے لگ جاؤ اور جان لو تصوف اور کائنات کے سینے میں چھپے ہوئے سارے راز۔ یہی وہ واحد راستہ ہے تصوف اور علم غیب کی دنیا میں ملکہ بننے کا”

(اس دوران بار بار فیس بک پر کمپلین کی جا رہی مگر وہاں سے صرف ہر بار بلاک کرنےکا آٹو میسج مل رہا ہے)۔

(جواب)

"”اے میرے خدا۔۔۔پلیز مجھے معاف کر دے ۔۔۔  میں انتہائی پریشان ہوں ۔جانے میں نے کیسی خطا کی زندگی میں کہ جسکے بدلے یہ عذاب میرے سر پر آ گیا۔ دو سال ہونے کو آئے مگر یہ کم ظرف گھٹیا انسان روز تیرے نام پرعجیب و غریب نئی نئی کہانیاں گھڑکے مجھے ہرروز نئی نئی آئی ڈیز سے مسلسل زچ کر رہا ہے اور تو اپنی تذلیل ہوتے دیکھ کر بھی چپ چاپ بیٹھ کر میری بےبسی کا تماشہ دیکھ رہا ہے؟ کتنا کمینہ اور مکار شخص ہے یہ کہ معتبر ہستیوں کو بیچ میں لے آتا ہے تا کہ میں کچھ کہہ نہ سکوں۔اے بھیڑیے یاد رکھ میں سات پردوں میں تیری غلیظ آنکھ پہچان سکتی ہوں۔

 تو صرف اور صرف ایک جنسی کتا ہے وہ بھی خارش زدہ۔ بے غیرت جانور ابھی تک میرا انکار نہ سمجھا ہے۔ اے میرے خدا ۔۔۔۔۔اگر تو واقعی کہیں موجود ہے حقیقت میں تو پلیز میری داد رسی فرما کر اپنے ہونے کا ثبوت دے۔ اس رزیل شخص سے میری جان چھڑا یا پھر مجھے عزت احترام کی موت دے کہ اس طرح جینا ممکن نہیں رہا اور ساتھ  تم بھی غور  واسطہ جو حرامی تمھیں بھی تمھارے ابلیسی خدا کا واسطہ ذلیل، گھٹیا تمھیں بھی اس شیطان کا  جو مکروہ بشارتیں تم پہ نازل کرتا ہے اور تمھارے جیسے ان تمام ولیوں کا بھی جو تجھ سے گھٹیا انسان کو اپنا ترجمان بنا کر زمین گندی کرتے ہیں، میرا پیچھا چھوڑ دو ۔اف ۔۔۔کس نفسیاتی مریض کے ہتھے چڑھ گئی ہوں ۔۔۔ کتنی بڑی بھول ہوئی مجھ سے جو سب کچھ جانتے بوجھتے تصوف کے شوق میں تجھ جیسےخبیث درندے سے بات کرنے کو تیار ہو گئی۔۔ پلیز پلیز تم کو اس اللہ کا واسطہ جس کو نیک لوگ مانتے ہیں۔ میں ذہنی طور پر پاگل ہونے کے قریب ہوں ۔ دیکھو میرا گھر اور جاب میری پوری زندگی تباہ ہونے کے در پہ آگئی ہے۔ کل میں نے جاب پر کئی ہزار ڈالر کا نقصان کیا ہے اپنی کمپنی میں ۔ میرے شوہر کو شک ہو گیا ہے کہ میں ہر وقت اتنی پریشان سی کیوں رہنے لگی ہوں۔ پلیز مجھ پر رحم کرو ۔ میرا پیچھا چھوڑ دو۔۔۔۔۔۔ اچھا دیکھو ، منحوس آدمی۔ ہم ایک ڈیل کرتے ہیں جیساکہ تم خود ہی بار بار کہتے ہو کہ میں تو خود ہی اللہ کی بہت پیاری ہوں۔ سو جب اس نے مجھے ایسا کوئی پیغام نہیں بھیجا تو میں تمھاری کیوں سنوں گی بھلا ؟ جب وہ مجھے کوئی پیغام بھیجے گا تو میں خود تم سےرابطہ کر لوں گی۔ تب تک تم مجھے میسج نہ کرنا۔ جب تک میں خود نہ کروں۔ ورنہ نہ چاہتے بھی سخت قدم اٹھانے پر مجبور ہوں گی۔ اگر اب کبھی دوبارہ کسی نئی آئی ڈی سے مجھے میسج کیا تو تیری نسلوں کو ایسا سبق چکھاؤں گی کہ دنیا یاد رکھے گی ۔ سمجھے کتے؟

کھٹ کھٹ کھٹاک بلاک””

اگست 2014

(  نئی آئی ڈی سے)

جو کہانی خالق کائنات نے خود لکھی وہ کیسے جھٹلائی جا سکتی ہے بھلا، میں نہیں چھوڑ سکتا۔ تم اتنی کم عقل کیوں ہو؟ اگر تم نے میری بات نہ مانی تو میری مجبوری بن جائے گا تمھارے ارد گرد موجود سارے لوگوں سے مدد لوں اور انکو یہ ساری حقیقت بتاؤں۔ انکو سب کچھ سچ سچ بتانا ہو گا تاکہ وہ تم کو سمجھا سکیں اور تمہاری یہ ناجائز ضد ٹوٹے۔ کیوں تماشا بنانا چاہتی ہو ۔ تمہارے پیچھے آنا میری مجبوری ہے۔ یہ کیوں نہیں سمجھتی ہو مجھے تو زندگی بھر آتے ہی رہنا ہے۔ میں جو تمھیں اتنےسل سے مسلسل ثبوت دے رہا ہوں ۔ اب کیا چاہیئے اور؟ خدا نے میرے ہاتھ اتنے پیغام بھیجے ہیں بس اب عمل کا وقت ہے ۔ بھول گئی ہو تم کہ ہم دونوں تو کشتی نوح میں بھی سوار تھے؟ ہم وہ ابابیلیں تھے جنہوں نے ابرہا کے ہاتھیوں کی فوج تباہ کردی، ہم نے خدا کے حکم سے فرعون مصر کا خاتمہ کیا،میں ہی تھا وہ جو خدا کے حکم سے مچھر بن کر نمرود کی ناک میں گھسا اور وہ تڑپ تڑپ کر مرا۔ زرا سوچو کہ میں کیوں بار بار تم سے رابطہ کرنے پہ مجبور ہوں۔ یہ تو جنم جنم کا ساتھ ہے۔ قیامت تک زندہ رہ جانے والی محبت۔ یہ گال یہ ہونٹ یہ روشن چہرہ میرا ہے صرف میرے لیے ہے ۔۔۔۔۔۔ خدا نے میری اولاد اسی حسین جسم کے اندر رکھی ہے۔ میں حکم ربی کے سامنے بے بس ہوں۔ مجھے سمجھنے کی کوشش کرو۔ میں اسے حاصل کئے بنا نہیں چھوڑ سکتا۔ میری نسل ہی تم سے آگے چلنی ہے۔ یہ خدا نے طے کیا ہے، میں نے نہیں۔ جتنی جلدی ممکن ہوسکے تمھیں اپنے پہلے شوہر سے طلاق لے کر مجھ سے شادی کرنا ہی ہو گی۔ میں تمھاری جان نہیں چھوڑوں گا۔ تم میری زمین اور میں تمہارا آسمان۔ سب چرند پرند ہماری محبت کے نغمے گاتے ہیں۔ تمہیں معلوم ہی نہیں دیوار گریہ کے ساتھ کھڑے یہودی کیوں روتے ہیں، وہ صرف ہماری محبت سے جلتے ہیں اور ہماری اولاد سے بھی ،جب اتنی اذیت برداشت نہیں کرتے تو فلسطین کے مسلمانوں پہ بم گراتے ہیں، اگر تم میرا ساتھ دو تو ہم اپنے عشق کا بم ان پرگرائیں۔ توریت میں دیکھو میری نشانی کی تصدیق کے لیے مغولستان میں تین سورج بلند کر کے چند دن پہلے اللہ نے دُنیا کو حکم سُنا دیا ہے۔ ہر ایک نفس دیکھے گا، چرند پرند سنیں گے۔ اب سب کچھ میری حقیقت ظاہر ہونے کا وقت آ چکا ہے، ایک تم ہو کہ ضد پہ اڑی ہوئی ہو، یاد رکھو ہمارے خدمت گار فرشتے جاگ رہے ہیں اور تمھاری سب گستاخیاں دیکھ رہے ہیں۔ کل کو تمھیں ان کا حساب بھی چکانا پڑے گا”

(وہ سخت پریشانی کے باعث بار بار نروس بریک ڈاون کا شکار ہو رہی ہے اور تین دن اسپتال میں گزار کر آئی ہے )۔

دیکھو پلیز مجھے معاف کر دو ۔ اب مجھے خود کے ساتھ ساتھ تم پر بھی رحم آنے لگا ہے تم ہذیان بکتے ہو اور بے تحاشہ، یہ سارا کچھ عام انسان سن لے تو پاگل ہو جائے، تم جیسے لوگ ہمارے سماج میں بلاس فیمی کی اعلی مثال ہیں۔ جو مذہب کی آڑ لے کر بے غیرتی کی کسی بھی حد کو عبور کرتے ہیں۔ افسوس تو یہ ہےکہ اس کے بعد خود مرشد بن کر ہزاروں چیلے بھی بنا لیتے ہیں جو ان کے ہاتھ چومتے ہیں اوران پر جان دینے کو تیار رہتے ہیں۔ کوئی پوچھنے والا ہی نہیں، کوئی دوسرا غلطی سے بھی کچھ کہ دے تو کفر اور لادینیت کے فتوے لگا کر پل میں سر قلم کر دیتے ہو۔ تم نے یہ ریاکاری جہاں سے بھی سیکھی خوب سیکھی۔ شاباش۔ میں تم کو بلاک کر کر کے تھک چکی، میری انگلیاں فگارہوگئیں تم کو سمجھاتے۔۔ پلیز! اب منت کرتی ہوں کہ میرا پیچھا چھوڑ دو۔ اپنے نجس سلسلے کو بتا دو میں وہ نہیں جو وہ  مجھےسمجھ رہے ہیں۔ میں تمھیں کبھی نہیں ملوں گی۔ پھر تم نے کیوں میرا جینا حرام کر دیا ہے؟ آخر میں کب تک تمھاری آئی ڈیز بلاک کروں؟ ہر لمحے نئی بنا کر آ جاتے ہو۔ میں خودکشی کرنے کی حد تک تم سے تنگ آ گئی ہوں۔۔ دیکھو اگر تم مکاری نہیں کر رہے تو جان لو کہ تم انتہائی خطرناک نفسیاتی مرض، نسیان، خبط، کئی قسم کے ڈس آرڈراور شاید ( Schizophrenia) کا شکار بھی ہو جس میں انسان کو اپنی خواہشوں کے عکس باقاعدہ چلتے پھرتے نظر آتے ہیں اور سب کچھ اتنا حقیقی لگنے لگتا ہے جیسے واقعی سامنے موجود ہو۔ تمھیں میری نہیں بلکہ ایک نفسیاتی ڈاکٹر کی اشد ضرورت ہے۔ مجھے میرے شوہر سے جدا کرنے کی کوشش نہ کرو۔ اسے مجھ سے بہت محبت ہے وہ تو میرے بغیر ایک سانس بھی نہیں لے سکتا۔ اسےکبھی نہیں چھوڑ سکتی۔ ویسے بھی میں نے ابھی زندگی میں بہت کچھ کرنا ہے۔ عام سی انسان ہوں اور اسی میں بہت خوش ہوں۔ ہزار بار لعنت ملکہ بننے پر ۔۔۔۔ مجھے نہیں بننا، پلیز فار گاڈ سیک۔۔۔ اپنا اور میرا وقت اور انرجی ضائع نہ کرو۔ دیکھو میری مجبوریوں کا کچھ تو خیال کرو۔کیا میں خود اپنے آپ کو ڈی ایکٹی ویٹ کرلوں؟ ۔ میں کئی کلاسیز لیتی ہوں نیٹ پر۔ کئی انسانی فلاح و ترقی کے اداروں سے جڑی ہوں۔ وہ سب ختم ہو جائے گا۔ فیس بک ہی واحد ذریعہ ہے میرے پاس۔ پلیز میری مجبوری کو سمجھنے کی کوشش کرو۔ غور سے سنو۔۔۔۔ میری ذمہ داریاں بہت زیادہ ہیں جنکو نبھاتے میں پہلے ہی ادھ موئی ہو ئی جا رہی ہوں۔ اگر تم واقعی اللہ کے بندے ہو تو پلیز میرا ساتھ دو۔ خدا کے لیے مجھ پر رحم کرو۔ میری مدد کرو۔ اس طرح کی ذلیل حرکتیں کر کے میرا راستہ کھوٹا نہ کرو۔ تم میری راہ میں مسلسل کانٹے بچھا رہے ہو۔ تم نےمجھ پر زندگی کو تنگ کر دیا ہے۔ میں بہت تھکنے لگی ہوں ۔۔۔۔۔۔ مجھے تمھارے خدا یا تصوف،ملکہ یا بادشاہ سے کسی قسم کی دلچسپی نہیں ہے۔ بس تم مجھے کسی صورت بخش دو ۔ تمھارا میسج دیکھتے ہی میرا بلڈ پریشر شوٹ کر کے دو  سو تک جانے لگتا ہے۔ اعصاب جواب دے جاتے ہیں اور پریشانی کے مارے مسلسل مجھے وامٹنگ ہونے لگی ہے۔ دیکھو، میں تمھارے آگے ہاتھ جوڑتی ہوں اس سے پہلے کہ تمھارا کوئی نیا پیغام دیکھ کر میرے دماغ کی رگ پھٹ جائے۔۔۔۔۔۔۔ پلیز کسی نئی آئی ڈی سے اپنا منحوس چہرہ نہ دکھانا ۔۔اب میں یہ اذیت نہیں اٹھا سکتی۔ تم کو انسانیت کی قسم، تمہارے والدین کی قسم، آج کے بعد کبھی میسج نہ کرنا”

"کھٹ کھٹ کھٹاک بلاک”

(ساتھ ہی دو ہفتے  کے لیے اپنا اکاؤنٹ ڈی ایکٹیویٹ کرتی ہے ۔۔جس سے کافی نقصان ہوا  اسی تمام کلاسیز  کا۔۔۔)

(سے دوبارہ میسج ( دو  ہفتے بعد  اکاونٹ واپس کھلتے ہی نئی آئی ڈی

تم نے اپنا اکاونٹ کیوں بند کیا؟ کیا اس سے تمھیں کوئی فائدہ ہوا؟ کیوں تڑپاتی ہو قسم ہے مجھے؟ ؟کب ایمان لاؤ گی مجھ پر گر میں آخری مجدد نہیں ہوں فرزند کیا میں صفات نہیں رکھتا ہوں اور میں نے جو کچھ بھی کہا وہ جھوٹ تھا تو اللہ کے لیے کچھ مشکل نہیں کہ وہ مجھے عبرت کا نشان بنا دے۔ سیدنا عیسیٰ مسیح کی طرف سے سچا گواہ اور مُردوں میں سے جی اٹھنے والوں میں پہلوٹھا اور دنیا کے بادشاہوں پر حاکم ہوں اور اس نے ہمیں یہ بادشاہی دی اور اپنے پروردگار اور باپ کے لئے امام بھی بنا دیا۔ ان کی بزرگی اور سلطنت ابد الآباد رہے۔۔ تم صرف ایک دو سال میں گھبرا گئی میں تو زندگی بھر یونہی تمھیں میسج کرتا رہوں گا جب تک تم میری ہو نہیں جاؤ گی۔ تم سمجھتی کیوں نہیں کہ میں بھی مجبور ہوں ۔ تم خود مجھ سے شادی نہیں کرنا چاہتی تو نہ کرو مگر میری اولاد مجھے دے جاؤ جس نے دنیا کو فتح کرنا ہے۔ جب تک وہ مجھے نہیں ملے گی میں یونہی روز آتا رہوں گا۔ بہتر ہے کہ تم خدا کی مرضی سمجھ جاؤ اور میرا ساتھ دو، اگر میں سچا ہوں سچ کہہ رہا ہوں میری سچائی کی نشانیاں ظاہر ہو گئیں تو تم عبرت کا نشان بنو گی دُنیا کے لیے اور تم جو کچھ بھی کرو گی ایک دن اللہ مجھے لازم دکھائے گا کہ وہ مکمل انصاف کرنے والا ہے”

(ایک ہفتے کی شدید اذیت اور نروس بریک ڈاؤن کے بعد جواب)

 میں کیسی دنیا میں رہتی ہوں، یہاں ایسے کچھ بھیڑیا نما انسان کھلے عام  دندناتے پھرتے ہیں جویوں عورتوں کا جینا حرام کرتے ہیں،اتنا بھی نہیں سوچتے کہ کتنی مشکلوں سے ہم وقت نکال کر نیٹ تک پہنچتی ہیں اور یہ خنزیر ہمارا گوشت چبانے کو تیار بیٹھے رہتے ہیں۔۔۔۔ یہ تو جیسے کوئی دہشت گرد ڈریکولا میرے پیچھے لگ گیا ہے۔ اے ظالم مردود انسان ۔۔۔۔کاش تجھے میری اذیت کا اندازہ ہو جائے میں اس وقت کس قدر تڑپ تڑپ کے رو رہی ہوں۔ تجھے تمہاری ماں کا واسطہ میرا پیچھا چھوڑ دو ، میرا سارا مستقبل تباہ ہو جائے گا۔ اور میرا گھر بھی ، میرے شوہر کو مجھ پر کس قدر بھروسہ ہے اگر وہ یہ سب دیکھ لے تو میں اس کی نظروں میں کس قدر گر جاؤں گی، وہ دوبارہ کبھی مجھ پر بھروسہ نہیں کرے گا اور میں بنا کسی خطا کے سزاوار ہوں گی۔ دیکھو ۔۔۔۔ پلیز میں تمھارے پاؤں پڑتی ہوں۔ تمہارے آگے ہاتھ جوڑتی ہوں۔ مجھ سے کوئی غلطی ہوئی ہے تو معاف کردو مگر میری زندگی سے چلے جاؤ اور مجھے سکون سے رہنے دو اپنی زندگی جینے دو۔ دور ہو جاو ظالم انسان۔ میں ایک شادی شدہ  اور بہت عزت دار عورت ہوں ۔۔ خدارا کچھ تو شرم و لحاظ کرو۔

"کھٹ کھٹ کھٹاک بلاک”

نومبر2014

نادان عورت، جس بات کا  علم نہ ہو اس کو جھٹلانے کا سوچ بھی نہیں سکتے۔ میں ان حسین آنکھوں میں آنسو نہیں دیکھ سکتا۔ تم اتنا ڈرتی کیوں ہو کیا پہلے کبھی کسی عورت کی طلاق نہیں ہوئی؟ کیا تاریخ میں ایک عورت نے پہلا شوہر چھوڑ کر دوسرے کا گھر نہں بسایا؟  ہر عورت میں خدا نے یاد داشت بھی اسی لیے کم رکھی کہ وہ اس جگہ کو بھول جائے جہاں سے آئی ہے۔ روحانیت کے راستے میں یہ سودا مہنگا تو نہیں، کیا تم مجھ جیسے مقدس شخص کی بابرکت محبت کو دنیاداری پہ قربان کردو گی؟ پورا پلان میرے ذہن میں ہے ۔ ہم بہت آرام سے وہاں سیٹ ہو جائیںگے تم صرف میری بات سمجھنے کی کوشش کرو، میری دوستی قبول کرو اسی وقت۔ اگر تم نے میری بات نہ مانی تو میں مجبور ہوں تمھارے رشتے داروں کو اس معاملے میں شامل کرنا پڑے گا، میری بات تو تم سمجھی نہیں اب وہی تم کو سمجھائیں گے۔ اپنے روایتی عورت پن سے نکل کے دنیا دیکھو دنیا ،کتنی حسین ہے ۔ یہ عمل نہیں کرو گی تو ہمیشہ ناقص العقل رہو گی ہر عام عورت کی طرح ، بد بخت نہ بنو”

جنوری 2015

حرام زادے ۔ سالے ۔ باسٹرڈ بہت سن لیا اور بہت سہ لیا تیرا بھونکنا کتے۔

 میری بات غور سے سن ۔  کئی شیطانوں کے نطفے سے مل کر بنا ہے تو حرامی کسی ایک انسان کے بس کی بات نہیں۔ اے ذلیل شخص، تاریخ کی گندگی کی ساری روایت میں تیرے جیسا بد نیت، کم ظرف اور کتا انسان کوئی نہیں، نیچ پن میں تم اپنی مثال آپ ہو۔ شرم بھی نہیں آتی اپنے آپکو مقدس روح کہتے ہو۔ کہنا تو نہیں چاہتی لیکن مجھے بہت مجبور ہو کے کہنا پڑ رہا ہے کہ تیری اس خارش کے پس منظر میں کوئی بہت غلیظ کہانی ضرور موجود ہے جس کے نتیجے میں تجھ جیسی یہ ذلالت معرض وجود میں آئی اور اس گھٹیا راز سے صرف تیری ماں ہی واقف ہے۔ شاباش کمینے ویمپائرجاری رکھو اپنی غلاظت لیکن سب سے پہلے یہ تبلیغ ماں بہنوں، بھانجیوں، بھتیجیوں اور تمام رشتہ دارعورتوں سے شروع کر۔ انہیں بتاو کہ تمہیں کس قسم کی تجلیات اور نروان ہوتے ہیں تاکہ انہیں بھی احساس ہو کہ وہ کس نجس بھوت کو پال رہی ہیں اگر ان کا بھی یہ فیملی بزنس نہیں ہے اور ضمیر ابھی زندہ ہے تو میری تکلیف کا اندازہ کر کے تڑپ جائیں گی اور اگر تمہارے گھر کا سارا ماحول اسی قسم کاروحانی ہے تو گھر کے دروازے پر ایک بڑا سا بورڈ لگا دو روحانی کنجرخانہ نام رکھ کر۔

زندہ باد اے نمرود کے حرامی مچھر۔تجھ  سے یہی امید کی جا سکتی تھی۔۔۔ تمہارے ولیوں نے تمہارے دل پہ ودیعت نہیں کی بلکہ تمہاری کسی خاص جگہ کے اندر کوئی کیڑا رکھا ہے جو تمہیں چین سے بیٹھنے نہیں دیتا۔ میں ابھی تک نرمی اختیار کر رہی تھی کہ بچارہ کوئی نفسیاتی مریض ہے خود ہی سمجھ جائے گا لیکن تو نے حدہی کر دی کسی کنجر کی اولاد۔ کیسی بد روح میرے پیچھے لگی کہ میرے پاس ساری چوائسز اور برداشت ہی ختم کر دی۔ اب دیکھ میں تیرا انجام کیا کرتی ہوں۔ سور۔۔۔مجھے کمزور اور بےبس سمجھتا ہے کتے؟ میری زمین میرے لیے ہی تنگ کرنے نکلا تھا اب دیکھ کیسے بند ہوتا ہےیہ سب۔

 پہلے تو سائبر کرائم اور سیکچوئیل ہیراسمنٹ کا کیس بناؤنگی تجھ پر ذلیل انسان میں فیس بک والوں سے اس سلسلے میں بات کر رہی ہوں۔ پھر پورے میڈیا پر نشر ہو گا تو جنسسی جنونی بھیڑیے ۔۔ سارا   زمانہ تیرے کرتوتوں سے واقف ہو گا۔ تیری بادشاہت دیکھ میں کہاں سے نکالتی ہوں۔ پولیس والے جوتے مارتے جیل لے کر جائیں گے۔۔ بول کسی گندے لمحے کی پیدائش ۔۔۔۔ مجھے مذہب کے نام پر الو بناتا ہے، غیریت تو تجھے چھو کر نہیں گزری ۔ حیرت تویہ ہے کہ تم اور تمھارا ابلیسی خدا دونوں میرے سامنے اتنے مجبور ہیں کہ تم دونوں کو اپنی طاقت کے لیے خود میری محتاجی کرنا پڑ رہی ہے؟ یہ کیسی خدائی ہے تم دونوں کو شرم نہیں آتی میری منتیں کرتے ؟ پوچھ اپنے جد امجد سے کہ مذید کتنی رسوائی تیرے نصیب میں ہے؟ دیکھ کتے ۔۔۔۔۔ جس کی زندگی تو نے جہنم بنانے کی کوشش کی تھی اس نے تیرا کردار تاریخ میں کیسے سیاہ حرفوں سے لکھ دیا ہے۔ تجھے بھی بشارت ہو کہ تو رہتی دنیا تک ملعون و معطون رہے گا۔ تجھے ہر حال میں مجھ سے اولاد چاہیئے نا اسی لیے میرے پیچھے پڑا ہے نا تو سن کتے اپنے گریبان میں جھانک اور سوچنا ضرور کہ تیرے جیسے کتنے ابلیس ہیں جو لوگوں کو خدا کے نام پر گمراہی کی دلدل کی طرف گھیسٹ رہے ہیں ۔ تمہاری لایعنی ماورایت میں تمھارے منہ پہ مارتی ہوں ۔ اے ابلیسی ولی تجھ پر اور تیری ولایت پر لکھ دی لعنت۔ یہیں پر تمھارا پول کھل گیا ہے ۔۔۔ سن کمینے۔۔تجھے باقی سب کچھ تو لوح محفوظ پر لکھا نظر آ گیا مگر یہ نہیں کہ جس عورت کےجسم سے رحم ہی نکال دیا گیا ہو وہ اپنے پہلے شوہر سے طلاق لے کر تجھ سے شادی کر بھی لے تو بھی کیسے تیری منحوس اولاد کو جنم دے گی؟

(اپنی جان چھڑانے کی خاطر اتنا بڑا جھوٹ لکھتے وقت اسکے ہاتھ بری طرح کانپے)

(فوری اور آخری جواب)

تم نے مجھے اتنی ننگی گالیاں دیں مجھے قدم قدم ذلیل و رسوا کیا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ شاید اتنی ننگی گالیاں اس دنیا میں کوئی عورت کسی مرد کو نہ دے سکے ۔ میرا دل پھٹا میرا کلیجہ چیر چیر ہوا میں تڑپا سسک گیا اور خدا کے حضور رو رو کر سجدہ ریز ہوا۔ میں اللہ سے کچھ پوچھوں اور اس سے جواب نہ پاؤں یہ ہو نہیں سکتاــ ابھی جب میں رنجیدہ ہو کراللہ کی طرف گیا تو اس نے بتایا کہ انسان سے زیادہ  زہریلا کوئی جاندار نہیں ۔  وہ کبھی بھیڑیا بن جاتا ہے تو کبھی شیر کبھی لومڑ کا چہرہ لگا لیتا ہے تو کبھی سانپ بن جاتا ہے، عورت بھی ناگن بن سکتی ہے، ہر انسان کے بہت سے اور روپ بھی ہوتے ہیں ایسا ہی ایک روپ اس عورت کا سمجھ کر تو بھی اس پر صبر کر لے  ۔ اللہ نے یہ بھی کہا یہ سٹیج میں نے ہی سجایا ہے یہ کردار میرے ہی چنے ہوئے ہوئے ہیں ۔ وقت ہر چیز کا مرہم بھی ہے اگر میں پہلے یہ سچ تجھے بتاتا تو یہ کبھی تمارے سامنے اس طرح خود کو نہ ظاہر کرتی ۔ میں نے اسکے اپنے منہ سے تجھے یہ سچ سنوانا تھا” ۔۔۔ لو میرے خدا نے مجھ پر کیسی حکمت سے تمھاری بنجر حقیقت کھول دی۔ اب تم مجھے ہمیشہ کے لئے ابھی بلاک کر دو میں تم سے بہت تحفے لے چکا ہوں مزید کا متحمل نہیں ہو سکتا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ میری آنکھ کھل چکی ہے۔ بانجھ عورت اپنے اخلاق میں بھی بانجھ ہوتی ہے اور۔۔۔۔۔اور تجھ جیسی بانجھ عورتوں کی روئے زمین پر کوئی کمی ہے کہ میں دوبارہ تم سے اپنی ماں بہن کو یوں گالیاں دلواؤں ؟ آج سے تم میری طرف سے ہمیشہ کے لئے آزاد کر دی گئی ہو بدنصیب گمراہ عورت! میں واپس اپنی دنیا میں جا ریا ہوں۔ ہزار شکر کہ بال بال بچ گیا۔ خدا کے کاموں میں کوئی مصلحت ضرور ہوتی ہے۔ میرے ولیوں نے مجھے بہت بڑی مصیبت سے بچا لیا اور اب میں اپنی دنیا میں جاوں گا جہاں تم جیسے کند ذہن لوگ نہیں جا سکتے۔ میں ایک روح ہوں اور مجھے کائنات کی سیر سے فرصت ہی کہاں ہے۔ تم رہو اس فانی دنیا میں اور دکھ اور موت برداشت کرتی رہو۔ تمھارے لیے یہی لوح محفوظ پہ لکھ دیا گیا ہے۔ میرے لئے پرستان کی پریوں اور جنت کی حوروں کی کوئی کمی نہیں۔ روز محشر تم مجھے پکاروگی اور اس وقت نہ جانے ہم کہاں ہونگے۔ ویسے بھی تم جیسی کم فہم عورتوں کو اتنی گہری باتیں کہاں سمجھ آسکتی ہیں۔ ہمیشہ کے لیے اللہ حافظ

مارچ 2016۔۔۔۔۔2080

اسلام علیکم و رحمت اللہ و براکتہ۔ ماشاءاللہ چشم بد دور۔ کیا ہی خوبصورت چشم کشا کہانی لکھی ہے آپ نے۔ لوگ دین کو سمجھتےہی نہیں۔ بہت خوب ۔ اس عمدہ کہانی پر بہت مبارک باد قبول کیجیئے۔ یقیناً کوئی گمراہ شخص ہی ایسا کر سکتا تھا۔ آپ تو بڑی مجاہدہ نکلیں جو بچ گئیں۔ توبہ استغفار۔۔۔۔۔ جہاد اصل میں نفس کا بھی ہوتا ہے اور۔۔۔۔۔۔۔تصوف تو۔۔۔۔۔”

فوری جواب

"کھٹ کھٹ کھٹ بلاک”

- admin

admin

یہ بھی دیکھیں

دوڑ ۔۔۔ صغیر رحمانی

دوڑدوڑ صغیر رحمانی ”آپ کا خون سفید ہو چکا ہے۔“ ڈاکٹر کی حیران کن بات …

2 تبصرے

  1. Avatar

    بہت طویل عرسے بعد اتنی عمدہ تحریر یوں جم کے پڑھی ، بہت لطف آیا ،،،،

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے