سر ورق / کالم / فیصل سعید ضرغام سے ملاقات * صفیہ شاہد

فیصل سعید ضرغام سے ملاقات * صفیہ شاہد

ینگ ویمن رائٹرز فورم اسلام آباد چیپٹر کی کابینہ نے علم و ادب کے میدان کی  جانی پہچانی شخصیت محترم فیصل سعید ضرغام سے ملاقات کی*
صفیہ شاہد
گزشتہ دنوں ینگ ویمن رائٹرز فورم، اسلام آباد  نے معروف افسانہ نگار و نقاد فیصل سعید ضرغام کے ساتھ ایک ادبی نشست رکھی.اس نشست میں فورم کی جانب سے کو فاؤنڈر اسلام آباد چیپٹر محترمہ رابعہ بصری,صدر اسلام آباد چیپٹر محترمہ فرحین خالد,صفیہ شاہد,معافیہ شیخ,طاہرہ غفور, اور سمیرا ناز نے شرکت کی.شرکاء نے جناب فیصل سعید سے افسانہ نگاری,علامتی افسانہ,نئے موضوعات اور اسلوب کے حوالے سے مختلف سوالات کیے جن کے انہوں نے بہت مدلل انداز میں جوابات دیے.دوران گفتگو انہوں نے افسانہ تخلیق کرنے کے حوالے سے  کہا کہ
*”قاری ہمہ وقت خبروں اور واقعات کی زد میں ہے. Breaking News سے دوچار قاری کے لیے کہانی کے اچھوتے پن سے چونکا دینا جوئے شیر لانے کے مترادف ہے. ایسے میں ایک زیرک لکھاری تین باتوں کو اپنی کہانی میں برتتا ہے….*
*1) تخلیقی تفکر آمیز جملے*
*2 ) غیر متوقع انجام*
*3 ) ماحول / افسانے کے سیٹ اپ  میں داخلی کیفیات کا اظہار. "*
مذید براں افسانے کے لیے موضوعات کا تعین اور نئے موضوعات کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ
*”موضوعاتی سطح پر جو تجربات ہونے تھے وہ ہو چکے … وقت, واقعات کو کہانی میں بدلتا رہے گا. اب یہ لازم ہے کہ تجربات اسلوبیاتی سطح پر کیے جائیں.”*
فیصل سعید صاحب کی علمی و ادبی گفتگو سے تمام شراکائے محفل مسفید ہوئے.معافیہ شیخ نے اپنا افسانہ پیش کیا جس پر بھرپور گفتگو ہوئی..محترمہ فرحین خالد نے اپنا احساسات و جذبات سے لبریز اور مہارت سے لکھ ہوا افسانچہ پیش کیا.سمیرا ناز,صفیہ شاہد اور طاہرہ غفور کی تحریروں پر بھی بات چیت ہوئی.آخر میں محترمہ رابعہ بصری نے اپنی غزل سنائی اور اختتامیہ کے طور پر فیصل سعید صاحب نے اپنے اشعار سے نوازا…صدر محترمہ فرحین خالد کی جانب سے مہمانوں کی تفریح طبع کے لیے افطار ڈنر کا اہتمام بھی تھا.یوں ایک بھرپور نشست اپنے اختتام کو پہنچی.

- admin

admin

یہ بھی دیکھیں

۔۔۔اور چوپال سج گئی….محمد قاسم سرویا۔۔

۔۔۔اور چوپال سج گئی محمد قاسم سرویا۔۔۔ شیخوپورہ کچھ کرنے کا جذبہ ہو، لگن ہو، …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے