سر ورق / افسانہ (صفحہ 2)

افسانہ

کٹوری…روما رضوی 

کٹوری روما رضوی "کہتے ہیں۔۔۔۔” آزادی سب کو ہی بہت عزیز ہوتی ہے” ۔۔۔۔۔بھلے روکھی سوکھی کھا کر چین کی نیند ہو ۔۔اس سے بڑھ کر کوئی نعمت نہیں۔۔۔۔۔ قید پرندے آزادی کے دن کبھی نہیں بھولتے” ۔۔۔قصہ کہنے والی نے انگڑائی لی اور آنکھوں کو افق پر جماتے ہوئے …

مزید پڑھیں

 ” صرف بیٹیوں کو ہی نہیں ” … خالد شیخ طاہری

 ” صرف بیٹیوں کو ہی نہیں " از۔ خالد شیخ طاہری جون کی ایک تپتی ہوئی دوپہر تھی،  آگ برساتے سورج نے ہر شے کو اپنی لیپٹ میں لے رکھا تھا۔ گرم ہواؤں نے ہر ذی نفس کو اپنے اپنے  ٹھکانوں میں محدود سا کر دیا تھا۔ ایسے میں بھلا …

مزید پڑھیں

نا رسائی…محمد جاوید انور

نا رسائی محمد جاوید انور میرے بھاری جوتے خزاں گزیدہ سوکھے پتوں کی احتجاجی آوازوں سے بے نیاز، انہیں روندتے چلے جا رہے تھے۔ میری کیفیت سے بے پروا            زوال پذیر سورج نارنجی اُفق میں غروب سے قبل کی آخری رنگ ریزی میں مگن تھا۔ میں زرد پڑتی گھاس کے …

مزید پڑھیں

"ٹرررن جی صاب” … ابصار فاطمہ

"ٹرررن جی صاب” تحریر ابصار فاطمہ آپ کو پتا ہے میں کون ہوں؟ میں گھنٹی پہ ناچنے والا روبوٹ ہوں۔ حیران ہوگئے کیا کہ آپ کو پتا بھی نہیں چلا اور سائنس دانوں نے گھنٹی پہ ناچنے والا روبوٹ بھی ایجاد کرلیا۔ تو چلیں ایک اور بات پہ حیران کروں؟ …

مزید پڑھیں

میرے ساقیا…شہباز اکبر الفت

میرے ساقیا شہباز اکبر الفت میرے دشمن ہیں زمانے کے غم بعد پینے کے یہ ہوں گے کم آج پیمانے ہٹا دو یارو سارا میخانہ پلا دو یارو آگ سے آگ بجھے گی دل کی آج یہ آگ بھی پی لینے دو ابھی زندہ ہوں تو جی لینے دو جی …

مزید پڑھیں

 ” ہوس کے بیوپاری :طلحہ کھرل 

         ” ہوس کے بیوپاری” :طلحہ کھرل بھلے ہی وہ جھگی کے ایک اَن پڑھ, بے بس, لاچار اور غریب بوڑھے ماں باپ کی بیٹی تھی لیکن وقت کے ساتھ ساتھ قدرت کے انمول رتن اس پر مکمل طور پر واضح ہونے لگے تھے _____ جمیلہ ایک …

مزید پڑھیں

تھانے دار سے سیکیورٹی گارڈ تک ۔  بابا جیونا

تھانے دار سے سیکیورٹی گارڈ تک ۔  بابا جیونا چاچا رحمت ہمارا گارد انچارج تھا ۔ وہ اپنے رہن سہن اور سادگی سے بالکل بھی سب انسپکٹر نہیں لگتا تھا ۔ سر پہ امامہ شریف چہرے پہ خوبصورت داڑھی پیشانی پہ سجدوں کے واضح نشان ہاتھ میں ایک خوبصورت منکوں …

مزید پڑھیں

دشت ِ وحشت : محمد جاوید انور

دشت ِ وحشت افسانہ نگار: محمد جاوید انور وہ مجھے سرحد تک جانے والی ٹرین کی منتظر ریلوے کے مخصوص بنچ پر بیٹھی ملی۔ بڑے اسٹیشن پر بہت رونق تھی۔ ہفتے میں دوبار سرحد تک ، جانے والی گاڑی نے علی الصبح نکلنا تھا۔ برادر ملک کے ساتھ مسافروں کی …

مزید پڑھیں

 آسیب…ناصر صدیقی

۔ آسیب ناصر صدیقی نسرین کو اپنی ماں ثریا کے شب و روز بارے کم پتہ تھا۔البتہ اتنا ضرور جانتی تھی کہ اسکی ماں باقی عورتوں سے یکسر مختلف ہے اورگاؤں والے اسے ایک آسیبی عورت سمجھتے ہیں۔ نسرین جب دس سال بعداپنے شوہر کی ناگہانی موت کے بعد واپس …

مزید پڑھیں

کُشتی : محمد جاوید انور

کُشتی افسانہ نگار: محمد جاوید انور ’’پھر میں نے اُسے کہا کہ زیور اتار کر رکھ لو‘‘۔ ’’وہ کیوں ؟ کیا کوئی کشتی ہونے جا رہی تھی؟‘‘۔ ہم تینوں حمید کے ساتھ جڑے بیٹھے تھے۔ آٹھویں کے سالانہ امتحانات سر پر تھے لیکن پھر بھی حمید کو شادی کے لئے …

مزید پڑھیں