سر ورق / کہانی (صفحہ 11)

کہانی

سایہ دیوار۔۔امجد جاوید

سایہ ءدیوار وہ دونوں سڑک کنارے کھڑی ارد گرد پھیلا ہو سنسان ویرانہ دیکھ کرششدر رہ گئی تھیں۔یوں جیسے کچھ کہنے کو لفظ ہی گم ہو گئے ہوں۔چند لمحے پہلے تک بس کا شور چند لمحے ہوا میں گھلا رہا پھر وہ بھی ختم ہو گیا۔ انہیںماحول میں سناٹے کا …

مزید پڑھیں

چوں کہ چناں چہ۔۔ نوشاد عادل

                                        چوں کہ چناں چہ ڈربہ کالونی کے شاعرو ادیب سخن اکبر آبادی کو کہانیاں لکھنے کا شوق تو پیدائش سے بھی پہلے کا تھا‘یہ بات وہ خود قسمیں کھا کھا کر بتاتاتھا اور پھر اس نے کہانیاں لکھنے کا سلسلہ شروع کر دیا۔ایک روز کسی نے سخن سے …

مزید پڑھیں

سنساری ۔۔ گرمیت کڑیاوالی/عامر صدیقی

پنجابی کہانی سنساری کی موت کی خبر آگ کی طرح پھیلی تھی۔ دسمبر کی کڑاکے دار سردی میں صبح لوگوں نے اس کے جسم کو سڑک کے کنارے پڑادیکھا تھا۔ پل بھر میں ہی یہ خبر جنگل کی آگ کی طرح قصبے میں اور اس سے ملحقہ دیہاتوں میں پھیل …

مزید پڑھیں

ٹوٹی کہاں کمند ۔۔ وسیم بن اشرف

کہانی کے مصنف کا اجمالی خاکہ (Peter Cheyney) پیٹر چینی ایک برطانوی سٹوری رائٹر تھے، وہ 22 فروری 1896ءکو مشرقی لندن میں پیدا ہوئے، 26 جون 1951ءکو لندن میں انتقال کر گئے، انہوں نے جرم و سزا پر بہت کچھ لکھا، طویل کہانیاں، مختصر سٹوریز اور 20 سے زائد ناول …

مزید پڑھیں

حفاظت۔۔ عبدالرشید فاروقی

رات کسی گناہ گار کے دل کی مانند سےاہ تھی۔ درختوں کودےکھ کر ےوں محسوس ہوتاتھا، جےسے لمبے لمبے دےو سینہ تانے کھڑے ہوں۔ہوا بند تھی، حبس ساہورہاتھا۔ہرطرف ہوکاعالم تھا۔ کبھی کبھار کسی جانورکی آواز ماحول مےںبے چےنی سی بپاکرجاتی تھی۔ رخ زےب کے چہرے پر پریشانی اور فکرمندی کے …

مزید پڑھیں

”گدھ“ …وسیم بن اشرف

قسط نمبر2 دونوں نے ایک دوسرے کو مر مٹنے والی نگاہوں سے دیکھا اور اپنے اپنے راستے پر ہو لئے ۔ شیراز نے نفرت اور غصہ سے رانو کی طرف دیکھتے ہوئے کہا “مجھے لگتا ہے تو اپنی حرکتوں سے باز نہیں آئی، تو اس چور ساربان سے اب بھی …

مزید پڑھیں

سنڈے بابا۔ نوشاد عادل

                                                          سنڈے بابا           ماحول پر ایک پراسراری خاموشی چھائی ہوئی تھی۔ ان سب کے چہرے دھواں دھواں ہورہے تھے، کیوں کہ قریب ہی کچرے میں آگ لگی ہوئی تھی۔ وہ سب بالکل خاموش تھے۔ یوں محسوس ہورہا تھا کہ جیسے اُن کو کتا چاٹ گیا ہو۔ ان کے چہرے …

مزید پڑھیں

آدھا ادھورا …اختر عباس

          یونیورسٹی سے واپسی پراس کا جسم ہی نہےں روح بھی تھکی ہوئی تھی ۔ آنکھےں کسی گہرے غار جیسی ہو رہی تھےں اور ہونٹ پیاسی دھرتی کی طرح سوکھے اور خشک۔ اسے اپنے 10 سالہ بےٹے کے انتظار کا احساس نہ ہوتا تو شاید اپنے دفتر میں ہی آ …

مزید پڑھیں

سلگن … اختر عباس

          ماسی بشیراں انڈہ پھینٹ رہی ہے اور مجھے لگ رہا ہے اس برتن میں انڈہ نہیں میرا وجود پھینٹا جا رہا ہے ۔غصہ زیادہ ہو یا بے بسی دونوں ہی صورتوں میں انسانی وجود اسی طرح پھینٹا جاتاہے۔           تھوڑی دیر پہلے میں نے گھر کے ملازموں میں تنخواہیں …

مزید پڑھیں

اپنے جیسے حصہ دوم عروسہ وحید

                ”اے نور میرے ساتھ بازار تو چل میں نے کچھ سامان لینا ہے۔“ اماں نے کہا                 ”نہیں امی میں نہیں جاﺅں گی آپ سحر کو ہی لیں جائیں نور۔“ جو اپنے ہاتھوں پر نیل پالش لگا رہی تھی بولی                 ”اس سے میں نے کہا تھا مگر اس …

مزید پڑھیں