سر ورق / کہانی (صفحہ 14)

کہانی

بابا گپّی؟ … امجد جاوید

                تاحدِ نگاہ سنہری ریت کے ٹیلے ہی ٹیلے دکھائی دے رہے تھے۔سہ پہر کی طلائی دھوپ میں ریت کا سمندر بڑا پراسرار دکھائی دے رہا تھا۔ اُفق تک بھوری ریت تھی ۔جہاں سے گہرا نیلا آسمان شروع ہوجاتا تھا۔ درمیان میں کہیں …

مزید پڑھیں

شیلف میں رکھی کتاب… امجد جاوید 

وہ کسی اجنبی کی طرح میرے قریب آ کر بیٹھ گئی اور کتاب پر نظر رکھے ۔لیکچر سننے لگی۔میں محسوس ہی نہ کر سکا کہ وہ کب تک مجھے سب سے منفرد  اور اچھی لگنے لگی تھی۔وہ نہ تو بلا کی حسین تھی اور نہ ہی ایسی کہ جیسے دیکھتے …

مزید پڑھیں